احتجاج

جنوبی کوریا میں ڈاکٹروں کے احتجاج کا تسلسل اور صدر کی مقبولیت میں کمی

پاک صحافت جنوبی کوریا میں حالیہ انتخابات سے پتہ چلتا ہے کہ میڈیکل اسکولوں میں داخلے کی گنجائش بڑھانے کے معاملے پر ڈاکٹروں کا مسلسل احتجاج حکومت اور صدر یون سک یول کی مقبولیت میں کمی کا سبب بن رہا ہے۔

پاک صحافت کے مطابق، یونہیپ کا حوالہ دیتے ہوئے، تازہ ترین پولز کے نتائج سے ظاہر ہوتا ہے کہ جنوبی کوریا کے صدر یون سک یول کی مقبولیت کم ہو کر 36 فیصد رہ گئی ہے۔ کہا جاتا ہے کہ ان میں سے کچھ عدم اطمینان کا تعلق جنوبی کوریا میں ڈاکٹروں کے حالیہ احتجاج سے ہے، جو میڈیکل اسکولوں کی صلاحیت کو کم کرنے کا مطالبہ کرتے ہیں۔

منگل سے جمعرات تک کیے گئے گیلپ پول کے مطابق، اییون کی سازگار تشخیص میں تین فیصد پوائنٹس کی کمی ہوئی، جب کہ منفی تشخیص تین فیصد پوائنٹس کے اضافے سے 57 فیصد تک پہنچ گئی۔

ملک بھر کے میڈیکل اسکولوں میں 2,000 رجسٹریشن کوٹہ شامل کرنے کے حکومت کے حالیہ منصوبے نے گزشتہ دنوں ڈاکٹروں اور طبی طلباء کی جانب سے احتجاج کی ایک بڑی لہر لائی ہے۔

جیسا کہ جنوبی کوریا میں ڈاکٹروں کے احتجاج اور ہڑتالیں جاری ہیں، ملک کی حکومت نے دھمکی دی ہے کہ اس ماہ کے آخر تک کام پر واپس نہ آنے والے ڈاکٹروں اور طبی تربیت یافتہ افراد کو سزا دی جائے گی۔

حکومت نے پہلے خبردار کیا ہے کہ وہ کام پر واپس آنے کے حکم کی تعمیل نہ کرنے والے ڈاکٹروں کے خلاف قانونی کارروائی کر سکتی ہے، جس میں میڈیکل لائسنس کی منسوخی، قانونی کارروائی اور ممکنہ گرفتاری بھی شامل ہے۔

احتجاج کرنے والے ینگ ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ حکومت ڈاکٹروں کی تعداد بڑھانے کی کوشش کرنے سے پہلے تنخواہوں اور اوقات کار کی شرائط پر غور کرے۔

یہ بھی پڑھیں

امریکی صدور

سی این بی سی : “مہنگائی کا بحران”؛ ٹرمپ کے خلاف بائیڈن کی بڑی انتخابی پریشانی

پاک صحافت سی این بی سی کے تازہ ترین سروے کے مطابق امریکی ووٹرز مہنگائی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے