اقوام متحدہ مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے ٹھوس اقدامات کرے

اقوام متحدہ مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے ٹھوس اقدامات کرے: پاکستان

نیویارک/اسلام آباد(پاک صحافت) پاکستان نے اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل  پر زور دیا ہے کہ وہ  مسئلہ کشمیرکے حل کے لئے ٹھوس اقدامات کرے،  مسئلہ کشمیر ایک سیاسی مسئلہ ہے سیاسی وجوہات رکھنے والے مسائل کے سیاسی حل کو فروغ دیا جائے۔

تفصیلات کے مطابق اقوام متحدہ کے پیس کیپنگ آپریشنز کی خصوصی کمیٹی کے 2021 کے سیشنز کے پہلے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان کے مستقل نمائندے منیر اکرم نے تنازع کے حل کے لیے اقوام متحدہ کی موجودہ حکمت عملی کی کوتاہیوں پر بھی زور دیا۔

مزید پڑھیں: مقبوضہ کشمیر میں مسلمانوں کی نسل کشی بند کرائی جائے: سردار مسعود خان

انہوں نے کہا کہ ظاہر ہے سیاست ہر چیز پر حکومت کرتی ہے منیر اکرم نے کہا کہ ہم جن نئے خطرات کا مقابلہ کرتے ہیں ان کی سیاسی وجوہات اور حتمی طور پر سیاسی حل بھی ہیں انہوں نے کہا کہ پیس کیپنگ کے پاس ایسے تنازع، شورشوں اور سرحد پار سے ہونے والے حملوں کو حل کرنے کی ذمہ داری قبول کرنے کا اختیار نہیں۔

انہوں نے کہا کہ تنازع کشمیر کو سب سے پہلے 1948 میں اقوام متحدہ میں لایا گیا تھا اور اس کے بعد سے یہ حل طلب نہیں رہا ہے حالانکہ اس سے پہلے ہی بھارت اور پاکستان کے درمیان دو جنگیں اور سینکڑوں سرحدی تصادم ہوچکے ہیں اگست 2019 میں بھارت نے غیرقانونی طور پر زبردستی جموں و کشمیر کے مقبوضہ حصوں کو اپنے ساتھ منسلک کردیا تھا جس سے جنوبی ایشیا کی دو جوہری قوتوں کے درمیان ایک خطرناک تعطل پیدا ہوگیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ فلسطین کا تنازع اس سے بھی پرانا ہے کیونکہ اسے 1945 میں اقوام متحدہ کے حوالے کیا گیا تھا اور ابھی تک یہ حل نہیں ہوا ہے منیر اکرم نے کہا کہ سلامتی کونسل سمیت بین الاقوامی برادری متعدد دیرینہ تنازع کا سیاسی حل تلاش کرنے میں ناکام رہی ہے جیسے جموں وکشمیر کا تنازع، انہوں نے کہا کہ حالیہ برسوں میں تنازع پھیلا ہے اور مزید بڑھا ہے، جس سے بڑے پیمانے پر انسانی حقوق کی پامالی ہوئی ہے اور بین الاقوامی امن و سلامتی کو خطرہ لاحق ہے۔

یہ بھی پڑھیں

پارلیمنٹ

صدارتی انتخاب کیلئے پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس 9 مارچ کو طلب

اسلام آباد (پاک صحافت) ملک میں نئے صدر کے انتخاب کے لیے پارلیمنٹ کا مشترکہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے