گوگل میپس

گوگل میپس میں ایک بڑی تبدیلی کر دی گئی

(پاک صحافت) موجودہ عہد میں ایسا محسوس ہوتا ہے کہ ٹیکنالوجی کمپنیوں سے اپنی لوکیشن کو چھپانا لگ بھگ نا ممکن ہے۔ یہی وجہ ہے کہ گوگل کی جانب سے لوگوں کے اس تاثر کو ختم کرنے کے لیے گوگل میپس میں ایسی تبدیلی کی جا رہی ہے جو اس سروس کو بدل کر رکھ دے گی۔ گوگل کی جانب سے اب صارفین کے ڈیٹا کو کلاؤڈ سرور کی بجائے ان کی ڈیوائسز میں ہی محفوظ کیا جائے گا۔

اس تبدیلی سے گوگل میپس کے صارفین کی پرائیویسی کو زیادہ تحفظ مل سکے گا۔ گوگل کے مطابق بتایا گیا ہے کہ یکم دسمبر تک صارفین اپنی لوکیشن ہسٹری کو موبائل ڈیوائسز پر منتقل کر سکتے ہیں جس کے بعد پرانے ڈیٹا کو کلاؤڈ سرور سے ڈیلیٹ کر دیا جائے گا۔ اگر آپ کو علم نہ ہو تو جان لیں کہ لوکیشن ہسٹری سے مراد ان علاقوں یا جگہوں کا ایسا انکرپٹڈ ریکارڈ ہے جہاں آپ جا چکے ہوتے ہیں۔

اس نئےفیچر میں لوکیشن ہسٹری کا نام بدل کر ٹائم لائن کر دیا جائے گا اور اس ڈیٹا کو آپ گوگل اکاؤنٹ کی بجائے اپنے فون پر ہی دیکھ سکیں گے۔ یعنی دسمبر 2024 سے ویب پر آپ لوکیشن ہسٹری تک رسائی حاصل نہیں کر سکیں گے۔ اس فیچر کا اعلان گوگل نے دسمبر 2023 میں کیا تھا مگر اب اس پر عملدرآمد شروع ہو رہا ہے۔

اگر آپ نے خود نئی ٹائم لائن سیٹنگز کو ان ایبل نہیں کیا تو پھر گوگل کی جانب سے خود 90 دن کی ٹریول ہسٹری کو اس ڈیوائس میں منتقل کر دیا جائے گا جس پر آپ نے گوگل اکاؤنٹ پر سائن ان کیا ہوگا۔ اس سے پرانے تمام ڈیٹا کو کمپنی کی جانب سے ڈیلیٹ کر دیا جائے گا، البتہ آپ 36 ماہ تک کے ڈیٹا کو محفوظ کر سکتے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

واٹس ایپ اسٹیٹس کی پرائیویسی بہتر بنانے کیلئے نیا فیچر متعارف

(پاک صحافت) اسٹوریز اب ہر سوشل میڈیا اور میسجنگ ایپ کا ایک لازمی جزو ہے، …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے