عمران خان

عمران خان کی سائفر کیس میں درخواست ضمانت مسترد کرنے کا تفصیلی فیصلہ جاری

اسلام آباد (پاک صحافت) اسلام آباد ہائی کورٹ نے عمران خان کی سائفر کیس میں درخواست ضمانت مسترد کرنے کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ نے چیئرمین پی ٹی آئی اور سابق وزیراعظم عمران خان کی سائفر کیس میں درخواست ضمانت اور مقدمہ اخراج کی درخواستیں مسترد کردی اور اس کا تفصیلی فیصلہ بھی جاری کردیا ہے۔ چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے جاری کیے گئے 20 صفحات پر مشتمل تفصیلی فیصلے میں کہا گیا ہے کہ بادی النظر میں پٹیشنر پر آفیشل سیکرٹ ایکٹ کے سیکشن 5 کا اطلاق ہوتا ہے۔

عدالتی فیصلے میں مزید کہا گیا ہے کہ استغاثہ کا کیس ہے کہ وزارت خارجہ نے سائفر کو ڈی کوڈ کر کے پرائم منسٹر سیکرٹریٹ کو بھجوایا۔ چیئرمین پی ٹی آئی نے بطور وزیراعظم سائفر کو وصول کیا اور بظاہر گم کردیا۔ استغاثہ کے مطابق سائفر کے مندرجات کو ٹوئسٹ کر کے سیاسی مقاصد کے لیے استعمال کیا گیا۔

ہائی کورٹ نے فیصلے میں کہا ہے کہ دفتر خارجہ کے سابقہ اور موجودہ افسران بالخصوص سائفر بھیجنے والے اسد مجید کے بیانات ریکارڈ پر ہیں۔ فیصلے کے مطابق دفتر خارجہ کے افسران کے بیانات سے واضح ہے کہ اس میں کوئی غیرملکی سازش شامل نہیں۔

یہ بھی پڑھیں

پارلیمنٹ

صدارتی انتخاب کیلئے پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس 9 مارچ کو طلب

اسلام آباد (پاک صحافت) ملک میں نئے صدر کے انتخاب کے لیے پارلیمنٹ کا مشترکہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے