سلامتی کونسل کشمیریوں سے کئے گئے وعدے پورے کرے: وزیرخارجہ

او آئی سی اجلاس سے وزیر خارجہ کا خطاب، مقبوضہ کشمیر دنیا کی سب سے بڑی جیل

اسلام آباد (پاک صحافت) وزیرخارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ سلامتی کونسل کشمیریوں سے کئے وعدوں کو پورا کرنے کی کوشش کرے۔ ان کا استصواب رائے کا حق دلانے کے وعدے کی تکمیل کو یقینی بنائے، پاکستان کشمیریوں کی بھرپور حمایت جاری رکھے گا۔

تفصیلات کے مطابق منگل کو  کشمیریوں کے یوم استصواب رائے کے موقع پر اہم پیغام میں وزیر خارجہ نے کہا کہ آج پوری دنیا میں کشمیری اقوام متحدہ کے اپنے ساتھ کئے جانے والے اس وعدے کی تکمیل کے انتظار میں بہتر سال گزرنے کا دن منارہے ہیں جس میں کہاگیا تھا کہ تنازعہ کشمیر کافیصلہ اقوام متحدہ کی نگرانی میں غیرجانبدارانہ اور شفاف رائے شماری میں کشمیریوں کے استصواب رائے سے ہو گا۔

اس قرارداد کے ذریعے اقوام متحدہ نے کشمیریوں کے ناقابل تنسیخ حق استصواب رائے کی تکمیل کے لئے اپنی حمایت کی توثیق کی تھی۔یہ وہ حق ہے جس سے تمام بنیادی اور انسانی حقوق جنم لیتے ہیں۔ افسوسناک امر یہ ہے کہ گزشتہ سات دہائیوں سے زائد عرصہ سے بھارت غیرقانونی طورپر بھارت کے زیرقبضہ جموں وکشمیر میں کشمیریوں کو ان کا یہ حق دینے سے کھلم کھلا انکاری ہے۔

مزید پڑھیں: انصاف کی بنیاد پر  مسئلہ کشمیرکا حل چاہتے ہیں:معید یوسف

اقوام متحدہ خاص طورپر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی ذمہ داری ہے کہ کشمیریوں کو ان کا استصواب رائے کا حق دلانے کے وعدے کی تکمیل کو یقینی بنائے۔اس وعدے کی عدم تکمیل کی تنہاوجہ، بھارت ہے۔ 5 اگست2019 کے بعد سے بالخصوص بھارت کا جبرواستبداداور مظالم نئی انتہاوں کو چھو چکا ہے اور 500 سے زائد ایام سے مقبوضہ وادی کا مسلسل فوجی محاصرہ جاری ہے۔

انہوں  نے کہا کہ کورونا عالمی وباکے دوران بھارت نے کشمیریوں کو زندگی، صحت اور خوراک کے بنیادی حقوق سے محروم کیاہے۔ بیدار عالمی ضمیر کو داد دیتے ہیں کہ جس نے بھارت کے غیرقانونی اور یک طرفہ اقدامات کو مسترد کیا جن کا مقصد غیرقانونی طورپر بھارت کے زیرقبضہ جموں وکشمیر میں آبادی کا تناسب تبدیل کرکے اس کی متنازعہ حیثیت کو بدلنا ہے تاکہ کشمیریوں کو ان کے استصواب رائے کے حق سے محروم کیا جاسکے۔

عالمی برادری کو کشمیریوں کے بنیادی انسانی حقوق اورآزادیوں کی حمایت جاری رکھتے ہوئے بھارت پر زور دینا ہوگا کہ اقوام متحدہ کے تحقیقات کاروں کو غیرقانونی طورپر بھارت کے زیرقبضہ جموں وکشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کی تحقیقات کرنے کی اجازت دے۔

 

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں