احتساب کے نام پر انتقام کا سلسلہ جاری ہے، شاہد خاقان عباسی

سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی

اسلام آباد (پاک صحافت) پاکستان مسلم لیگ ن کے سینئر نائب صدر و سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے حکومت اور نیب پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ  احتساب کے نام پر انتقام کا سلسلہ جاری ہے،  شاہد خاقان کا کہنا ہے کہ  جو سوالات ہم سے کیے جاتے ہیں وہ باقیوں سے کیوں نہیں ہوتے؟ کیا حکومت کا حساب لینے والا کوئی نہیں؟ ان کا کہناہے کہ آج پورے احتساب کے نظام پر سوالیہ نشان ہے۔ عدالتوں میں کیمرے لگائیں اور دیکھیں کس نے کرپشن کی۔ شاہد خاقان عباسی کہتے ہیں کہ آج نہ انصاف ہورہا ہے اور نا ہی انصاف ہوتا نظر آرہا ہے،آج ملک میں بے روزگاری اور مہنگائی ہے، سی پیک پر کام عملی طور پر رک چکا ہے لیکن کوئی پوچھنے والا نہیں۔

تفصیلات کے مطابق سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے  تنقید کرتے ہوئے کہا  کہ عدالتیں ایک ویزے پر لوگوں کو نااہل قرار دیتی ہیں لیکن وہ آج خاموش کیوں ہیں؟  وہ کون تھا جو براڈ شیٹ کے مالک کاوے موسوی سے ملا؟  ان کا کہنا ہے کہ احتساب کا ادارہ سمجھا جانے والا آج خود قابل احتساب ہے، آج نیب سے کوئی پوچھنے والا نہیں، نیب ملک میں سیاست کو ناکام اور بدنام کرنے کا طریقہ ہے، براڈ شیٹ معاملے میں سابق صدر پرویز مشرف کا نام بھی آتاہے، ان کا بھی ریمانڈ لیا جائے۔

واضح رہے کہ قومی احتساب بیورو (نیب) پر تنقید کرتے ہوئے سابق وزیر اعظم نے کہا کہ نیب 20 سال سے براڈ شیٹ کا معاملہ چلا رہی ہے،براڈشیٹ تو صرف ایک کیس ہے، ایسے کئی کیس نیب کی ناانصافیوں کی داستان ہیں۔ براڈ شیٹ دستاویزات کا بہت چھوٹا حصہ عوام کے سامنے آیا، ہمت ہے تو تفصیلات لائیں، بڑے بڑے نام منظرعام پر آئیں گے۔ سیاستدانوں سے جس معیار کے سوال کئے جاتے ہیں اسی طرح کے سوال کئے جائیں تو نیب کے 3 چیئرمین جیل میں ہوں گے۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں