انسانی حقوق کے ایک گروپ نے فلسطینیوں کے خلاف اسرائیلی فوج کی وحشیانہ کاروائیوں کا پردہ فاش کردیا

انسانی حقوق کے ایک گروپ نے فلسطینیوں کے خلاف اسرائیلی فوج کی وحشیانہ کاروائیوں کا پردہ فاش کردیا

تل ابیب (پاک صحافت) انسانی حقوق کے ایک گروپ کی جانب سے جاری کردہ ایک رپورٹ میں کہا گیا کہ 2020 کے دوران قابض صہیونی حکام نے فلسطینیوں کے ملکیتی 729 املاک اور مکانات کو مسمار اور 27 فلسطینیوں کو شہید کیا۔

انسانی حقوق کے گروپ بتسلیم کے مطابق 2020 کے دوران قابض صہیونی فوجیوں نے گھناونے قتل کا ارتکاب کیا اور مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں اسکی فاءرنگ سے 27 فلسطینی شہید ہوئے۔

بتسیلم نے گذشتہ پیر کو کہا کہ2020 کے دوران ، اسرائیلی سکیورٹی فورسز نے 27 فلسطینیوں کو شہید کیا  ان میں سے سات کم سن بچے غزہ کی پٹی میں ایک  مغربی کنارے میں 23 [اور مشرقی مقبوضہ بیت المقدس] اور اسرائیل کے اندر تین فلسطینی شامل ہیں۔

مقبوضہ مغربی کنارے میں بتسیلم کے ذریعہ کی گئی تحقیقات کے مطابق 16 شہادتوں میں سے 11 شہید فلسطینیوں  سے صہیونی فورسز  کو کوئی خطرہ لاحق نہیں تھا جس وقت انھیں گولی مار دی گئی تھی۔

برسوں سے اسرائیل مغربی کنارے میں ایک لاپرواہ غیرقانونی اوپن فائر فائر پالیسی پر عمل پیرا ہے، اس پالیسی کو حکومت ، فوج اور عدالتوں کی مکمل حمایت حاصل ہے۔

اس گروپ نے مزید کہا کہ بہت ہی کم معاملات میں جب اسرائیلی فوجیوں پر فلسطینیوں کے قتل کا الزام عائد کیا جاتا ہے تو  الزامات اور سزائیں جرائم کی کشش کو ظاہر نہیں کرتی ہیں۔

2020 کے دوران ، پھیلتے ہوئے کرونا وائرس وبائی امراض کے درمیان  اسرائیلی حکام نے کم از کم 729 فلسطینی عمارتوں کو بھی تباہ کردیا ، جن میں مکانات اور غیر رہائشی ڈھانچے بھی شامل ہیں۔

گروپ کے مطابق  2016 کے بعد2020 میں  ہر سال کے مقابلے میں زیادہ فلسطینیوں نے  مغربی کنارے اور مشرقی مقبوضہ بیت المقدس  میں  اپنے گھر کھوئے۔

بتسیلم نے کہا مجموعی طور پر  اسرائیل نے 2020 میں 273 مکانات مسمار کردیئے جس میں ،006 فلسطینی  آباد تھے، ان میں 519 کم سن بچے بھی بے گھر ہوءے ۔

2020 میں، اسرائیل نے 456 غیر رہائشی ڈھانچوں کو بھی منہدم کردیا، اس میں انسانیت کے بنیادی ڈھانچے جیسے پانی کے حوض اور پائپ یا بجلی کے گرڈ شامل ہیں، جو اس وقت صحت اور حفظان صحت کو برقرار رکھنے کے لئے ضروری ہیں۔

اس گروپ نے کہا کہ اس نے گذشتہ سال مغربی کنارے میں فلسطینیوں کے خلاف غیر قانونی یہودی آبادکاروں کے ذریعہ کیے گئے 248 حملوں کی دستاویزی دستاویز کی ہے۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں