رانا ثناءاللہ کی حکومت کو شدید وارننگ، کل کے جلسے میں کوئی حادثہ ہوا تو اس کی ذمہ دار حکومت ہوگی

رانا ثناءاللہ کی حکومت کو شدید وارننگ، کل کے جلسے میں کوئی حادثہ ہوا تو اس کی ذمہ دار حکومت ہوگی

مسلم لیگ(ن) پنجاب کے صدر رانا ثناءاللہ نے کہا ہے کہ کل لاہور کے جلسے کے بعد ملک میں غیرقانونی اور غیرقانونی مداخلت کے تمام راستے بند ہو جائیں گے، پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ(پی ڈی ایم) کل لاہور کے تاریخی مینار پاکستان پر جلسہ عام کا انعقاد کرے گی۔

مسلم لیگ(ن) کے سینئر رہنما رانا ثناءاللہ نے ہفتہ کو لاہور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ غیرآئینی، غیرقانونی مداخلت کے تمام راستے کل سے بند ہو جائیں گے اور اب پاکستان میں جمہوری دور ہوگا اور پاکستان میں ووٹ کی عزت ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ کل کے بعد ووٹ کے فیصلے کو تسلیم کیا جائے گا اور ہر ادارہ، ہر فرد اپنی آئینی حدود میں رہ کر کام کرے گا۔

رانا ثناءاللہ نے کہا کہ پاکستان کے عوام کل یہ فیصلہ دیں گے کہ پاکستان کو اب آئین اور قانون کے مطابق ہی چلایا جا سکتا ہے اور پاکستان کا آئین اور قانون کے مطابق چلنا ہی مہنگائی اور عوام کے مسائل کا علاج ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی ترقی اور خوشحالی کا راز بھی اسی میں ہے کہ عوام کے فیصلے کو تسلیم کیا جائے اور عوام کے مینڈیٹ کو تسلیم کرتے ہوئے یہاں حکومتیں قائم ہو اور عوام کی مرضی اور فیصلے کو سب دل سے تسلیم کریں اور پاکستان کو آئین اور قانون کے مطابق چلایا جائے گا۔

اس موقع پر ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ لاہور جلسے کے سلسلے میں انتظامیہ کا کوئی تعاون نہیں ہے، کرسی دینے، لائٹنگ کا انتظام کرنے والوں کے خلاف پولیس اپنا کریک ڈاؤن کررہی ہے، یہاں چیزوں کو لانے میں رکاوٹ بھی ڈال رہی ہے لیکن اس سب کے باوجود مینار پاکستان میں کنٹینرز اور کرسیاں بھی آئیں گے اور لائٹس کا نتظام بھی ہوگا۔

سابق صوبائی وزیر قانون نے کہا کہ میں عمران خان کی حکومت اور انتظامیہ کو یہ وارننگ دینا چاہتا ہوں کہ یہ ہمارا پرامن جلسہ ہے، یہاں پر لاکھوں کی تعداد میں پرامن طور پر اکٹھا ہو کر اپنے قائدین کا خطاب سنیں گے اور پرامن طور پر منتشر ہو جائیں گے۔

انہوں نے خبردار کیا کہ اگر حکومت نے مداخلت کی تو اس سے کوئی حادثہ یا تصادم جنم لے سکتا ہے اور اسکی تمام تر ذمے داری بنی گلا میں قائم حکومت، یہ کٹھ پتلی وزیر اعظم اور انتظامیہ پر ہو گی۔

رانا ثناءاللہ نے انتظامی افسران کے نام بھی پیغام میں کہا کہ آپ سول آفیسر بنیں، ریاست کے ملازم بنیں، آپ اس کٹھ پتلی حکومت کے ملازم نہ بنیں، اگر آپ نے کوئی ایسا عمل کیا جس کے نتیجے میں کوئی تصادم ہوا یا کوئی حادثہ ہوا تو آہ ساری زندگی انکوائریاں بھگتیں گے، مقدمات بھگتیں گے اور نوکری بھی جاتی رہی گی۔

ان کا کہنا تھا کہ اگر آپ نے قانون کا ساتھ دیا، اپنے آپ کو ریاست کے خدمت گار کے طور پر رکھا تو یہ کٹھ پتلی حکومت زیادہ سے زیادہ آپ کا تبادلہ کر سکتی ہے اور کچھ نہیں کر سکتی۔

انہوں نے کہا کہ عمران نیازی کی حکومت 200 مقدمے درج کرے، 2ہزار مقدمے درج کرے، یہ اپنے سیاسی مخالفین کے خلاف جھوٹے جعلی گھٹیا مقدمات درج کرنے کا ورلڈ ریکارڈ قائم کرے، ان پر کوئی مقدمہ نہیں چلے گا، ان سارے مقدمات سے پراسیکیوشن دستبردار ہو گی، صرف ایک مقدمے میں جس میں 15 کلو ہیروئن ان کی ہے، وہ مقدمہ ان پر درج ہو گا۔

مسلم لیگ(ن) کے رہنما نے مزید کہا کہ کسی بھی سیاسی جدوجہد، اجتماع اور سیاسی تحریک کی کامیابی کا ایک ہی پیمانہ ہوتا ہے کہ حکومت اس میں رکاوٹ ڈالے اور اس میں گرفتاریاں کرے۔

ان کا کہنا تھا کہ شیخ رشید ایک اسٹریٹ ورکر ہے، ایک چپڑاسی سے وزیر داخلہ بنا ہے، میں اس بے مثال ترقی پر انہیں مبارکباد دیتا ہوں۔

جلسے میں دہشت گردی کے خطرے کے حوالے سے سوال پر ان کا کہنا تھا کہ ہم ووٹ کو عزت دینے، اس ملک کو آئین اور قانون کے تحت چلانے کے لیے اس حد تک پرعزم ہیں کہ ہم ہر خطرہ مول لینے کے لیے تیار ہیں، کوئی خطرہ ہمارے راستے میں حائل نہیں ہو گا۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں