شاہد خاقان عباسی

لوگ موجودہ حکومت کے ساتھ نہیں چلنا چاہتے:  شاہد خاقان عباسی

اسلام آباد (پاک صحافت) پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنما شاہد خاقان عباسی موجودہ حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ لوگ موجودہ حکومت کے ساتھ نہیں چلنا چاہتے ،اس حکومت نے پاکستان کو تاریخی منہگائی دی، غربت میں دھکیل دیا،  ہر آدمی موجودہ حکومت سے تنگ ہے۔

سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کے دوران حکومت پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت ایک آرڈیننس کے ذریعے آئین کو بدلنا چاہتی ہے، ان عدالتوں میں 10 وفاقی وزراء، کم ازکم 3 وزرائے اعظم کے کیس ہیں، ان مقدمات کی حقیقت کا کسی کو علم ہی نہیں ہے،  لوگ اس حکومت کے ساتھ نہیں چلنا چاہتے۔

شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ اسلام آباد میں وکلا کی ہڑتال کے حل کی ضرورت ہے، وکلا کے چیمبرز نہیں گرائے جانے چاہیے تھے، وکلاء کے چیمبرز کے لیے جگہ مہیا کی جانی چاہیے۔انہوں نے مزید کہا کہ چیف جسٹس کے ساتھ جو زیادتی ہوئی اس کا دفاع نہیں کیا جا سکتا، چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ کے ساتھ زیادتی کا دفاع بھی نہیں ہوسکتا۔

مزید پڑھیں: حکومت نے قرضوں اور بیماریوں میں اضافہ کردیا، موجودہ نظام کا خاتمہ ضروری ہے، سراج الحق

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ حکومت خود الیکشن چوری کر رہی ہے، احتساب کا ادارہ کرپشن میں ملوث ہے، اسے کون پوچھے گا، عدل کا نظام ایک مذاق بن چکا ہے۔شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ  بدقسمتی ہے کہ آج پارلیمان مفلوج ہے، اسلام آباد میں عدالتی نظام مفلوج ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ صرف یہاں نہیں، لگتا ہے پورے ملک میں مفلوج ہے، آئین کو بدلنا صرف پارلیمان کا اختیار ہے۔اُن کا ڈسکہ الیکشن سے متعلق کہنا تھا کہ ڈسکہ میں جو ہوا وہ سب آپ کے سامنے ہے، آج وزیراعظم اور وزیراعلیٰ کٹہرے میں کھڑے ہوئے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

پارلیمنٹ

صدارتی انتخاب کیلئے پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس 9 مارچ کو طلب

اسلام آباد (پاک صحافت) ملک میں نئے صدر کے انتخاب کے لیے پارلیمنٹ کا مشترکہ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے