سپریم کورٹ

برطانوی سفیر کے الزامات پر چیف جسٹس سپریم کورٹ کا معنی خیز ردعمل

(پاک صحافت) برطانوی سفیر کے انتخابی عمل اور پاکستانی عدالتوں کی کارکردگی کے خلاف الزامات کے جواب میں ایک خط میں پاکستان کی سپریم کورٹ کے سربراہ نے ایران میں محمد مصدق کی حکومت کے خلاف بغاوت کی کہانی کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ فلسطین کے خلاف اعلان بالفور، اور تاریخ بھر میں برطانوی جمہوریت مخالف اقدامات کے نتائج سامنے آئے۔

سپریم کورٹ کے ایڈمنسٹریٹو ڈپٹی نے سپریم کورٹ کے چیف جسٹس فائز عیسی کی جانب سے پاکستان میں برطانوی سفیر جین میریٹ کو لکھے گئے ایک خط میں انتخابی عمل کے خلاف ان کے اعتراضات اور اس کے بارے میں شکوک و شبہات کا جواب دیا۔

برطانوی سفیر کو لکھے گئے اس خط میں کہا گیا کہ آزاد معاشروں اور متحرک جمہوریتوں کی اہمیت پر لندن کی دلچسپی اور زور خوش آئند ہے، حالانکہ ماضی کی پرتشدد اور غیر جمہوری غلطیوں پر اصرار تشدد کے چکروں کو جاری رکھتا ہے، لہذا آئیے اس سچائی کو قبول کریں۔

اس خط کے تسلسل میں پاکستان کے چیف جسٹس نے انگلینڈ کی براہ راست مداخلت سے بالفور ڈیکلریشن کے ذریعے فلسطینیوں کی سرزمین ہتھیانے کی سازش کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ اس وقت کی برطانوی حکومت نے نومبر میں ایک نو آبادیاتی آباد کار ملک بنانے کا اعلان کیا۔ 1917 میں ایک ایسا فیصلہ تھا جو نہ تو خطے (فلسطین) کے لوگ کامیاب ہوئے اور نہ ہی برطانوی عوام نے اسے ووٹ دیا۔

یہ بھی پڑھیں

عرفان صدیقی

کیا ملک و فوج کیخلاف سازش کرنے والی پارٹی سیاسی جماعت کہلائے گی۔ عرفان صدیقی

اسلام آباد (پاک صحافت) عرفان صدیقی کا کہنا ہے کہ کیا ملک و فوج کیخلاف …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے