امریکی سینیٹ میں ڈونلڈ ٹرمپ کو ذلت آمیز شکست کا سامنا، دفاعی بل پر کیئے گئے ویٹو کو مسترد کر دیا گیا

امریکی سینیٹ میں ڈونلڈ ٹرمپ کو ذلت آمیز شکست کا سامنا، دفاعی بل پر کیئے گئے ویٹو کو مسترد کر دیا گیا

واشنگٹن:(پاک صحافت) امریکی سینیٹ میں ڈونلڈ ٹرمپ کو اس وقت ذلت آمیز شکست کا سامنا کرنا پڑا جب ان کی طرف سے دفاعی بل پر کیئے گئے ویٹو کو مسترد کر دیا گیا۔

امریکی میڈیا کے مطابق کانگریس کے ایوان بالا سینیٹ نے مالی سال 2021 کے قومی دفاعی بل پر صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے ویٹو کو مسترد کر دیا ہے۔

جمعے کے روز 740 ارب ڈالر کے قومی دفاع اتھارٹی ایکٹ (این ڈی اے اے) بل کی حمایت کرنے والے سینیٹ کے دو تہائی سے زیادہ ارکان نے ٹرمپ کے ویٹو کو مسترد کرتے ہوئے بل منظور کر لیا، سینیٹ کے اس فیصلے کو ڈونلڈ ٹرمپ کے لیے بڑا دھچکا سمجھا جا رہا ہے کیوں کہ ان کے دور میں ایسا پہلی بار ہوا۔

مزید پڑھیں: صدارتی انتخابات میں ذلت آمیز شکست سے بوکھلائے ٹرمپ نے امریکی سپریم کورٹ کو نااہل قرار دے دیا

واضح رہے کہ 23 دسمبر کو امریکی صدر نے اس بل پر ویٹو کا اعلان کیا تھا، امریکی اراکین پارلیمنٹ کے ایوان زیریں اور ایوان نمائندگان نے دفاعی اخراجات کے بل کو 322 اور 87 کے فرق سے پیر کو ہی منظور کیا تھا، جس کے بعد اسے غور کے لیے ریپبلکن اکثریتی سینیٹ کو بھیجا گیا۔

چند ہفتوں میں عہدہ صدارت چھوڑنے والے ٹرمپ نے بل کی کچھ شقوں کی مخالفت کی تھی، وہ اس پالیسی کے مخالف ہیں جس کے تحت افغانستان اور یورپ میں امریکی فوجیوں کے انخلا کی تعداد کو محدود کیا جانا ہے۔

مذکورہ بل میں روسی میزائل دفاعی نظام ایس -400 خریدنے کے حوالے سے ترکی کے خلاف کارروائی کرنے کے لیے بھی ایک شق شامل کی گئی ہے۔

خیال رہے کہ امریکی کانگریس کو قانون سازی کے لیے منظور کردہ بل پر صدر کے دستخط لازمی ہیں، تاہم ایوان کے اراکین دونوں ایوانوں میں دو تہائی سے زیادہ اکثریت کے ساتھ بل پاس کر کے اور صدر کے ویٹو کو مسترد کر کے اس بل کو قانون بنا سکتے ہیں۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں