بی آر ٹی پشاور کے باتھرومز پوڈریوں اور ہیرونچیوں کی آماج گاہ میں تبدیل

باتھرومز

پشاور (پاک صحافت) پاکستان تحریک انصاف حکومت کا میگا پروجیکٹ پشاور بی آر ٹی افتتاح کے پانچ ماہ بعد بھی مکمل نہیں ہو سکا، ذرائع کے مطابق بس اسٹیشنز پر موجود باتھ رومز کے نام پر خالی کمرےشام ہوتے ہی پوڈریوں اور ہیرونچیوں کی آماج گاہ میں تبدیل ہو جاتے ہیں۔ خیال رہے کہ منصوبہ کی آمدن میں اضافہ کے لیے تین کمرشل پلازے بھی تعمیر ہونا تھے جو ابھی تک نامکمل ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف حکومت کا میگا پراجیکٹ بی آر ٹی منصوبے کو شروع ہوئے 5 ماہ سے زائد کا عرصہ گزر گیا مگر بیشتر بس اسٹیشنز پر مسافروں کے لیے تاحال باتھ رومز تک نہیں بن سکے ہیں۔ شہریوں کا کہنا  ہے کہ  باتھ رومز میں واٹر اینڈ سینیٹریشن کا سامان نصب نہ ہونے کی وجہ سے خالی باتھ رومز گندگی کے ڈھیر میں تبدیل ہو چکے ہیں۔

واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان نے 13 اگست 2020 کو بی آر ٹی پشاور کا افتتاح تو کر دیا مگر منصوبے کے نہ تو اسٹیشنز بیت الخلا مکمل ہو سکے اور نہ ہی منصوبے کے لیے آمدن کا ذریعہ بننے والے کمرشل پلازے مکمل ہو سکے۔ ذرائع کے مطابق ڈی جی پی ڈی اے کا کہنا ہے کہ کنٹریکٹرز کے ساتھ درپیش مسائل کی وجہ سے تعمیراتی کام رکا ہوا تھا جو آیندہ 20 سے 25 دن میں دوبارہ شروع کر دیا جائے گا، باتھ رومز اور کمرشل پلازوں کا کام جلد مکمل کیا جائے گا۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں