براڈشیٹ کے انکشافات سے حکمران طبقہ کی بدعنوانی بے نقاب:عمران خان

اسلام آباد (پاک صحافت) وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ برطانیہ میں مقیم فرم براڈشیٹ کے انکشافات نے ایک بار پھر ہمارے حکمران طبقہ کی بدعنوانی اور منی لانڈرنگ کو بڑے پیمانے پر” بے نقاب کردیا ہے ۔متعددٹوئٹس میں وزیر اعظم نے کہا کہ پانامہ پیپرز کے ذریعہ انہی لوگوں کو پہلے ہی بے نقاب کیا گیا تھااور”یہ اشرافیہ ان بین الاقوامی انکشافات کے پیچھے نہیں چھپ سکتے ہیں۔

عمران نے کہا کہ ان انکشافات نے بار بار انکشاف کیا ہے کہ وہ اپنی "کرپشن کے خلاف چوبیس سالہ لڑائی میں جو کہہ رہے ہیں جو ملک کی ترقی کا سب سے بڑا خطرہ ہے”۔”یہ اشرافیہ اقتدار میں آکر ملک کو لوٹتے ہیں، وہ بیرون ملک گھریلو استغاثہ سے محفوظ اپنے ناجائز منافع کو روکنے کے لئے منی لانڈرنگ کرتے ہیں، پھر وہ این آر اوز حاصل کرنے کے لئے اپنا سیاسی چنگل استعمال کرتے ہیں، اسی طرح انہوں نے اپنی لوٹی ہوئی دولت کو محفوظ رکھا۔

مزید پڑھیں: کسی کو امن خراب کرنے کی اجازت نہیں دیں گے، وزیر اعظم

انہوں نے مزید کہا کہ اس کا نتیجہ قوم کو بھگتنا پڑا۔”نہ صرف اشرافیہ کے ذریعہ ملک کا مال چوری کیا جاتا ہے، ٹیکس دہندگان کی رقم ، اس دولت کی بازیابی کے لئے ادا کی جاتی ہے ، ہم اپنے اشرافیہ کی منی لانڈرنگ پر براڈشیٹ سے مکمل شفافیت چاہتے ہیں۔ایک روز قبل وزیر اعظم نے براڈشیٹ پر تحقیقات کیلئے ایک  بین وزارتی کمیٹی تشکیل دی تھی وزیر اطلاعات شبلی فراز نے کہا کہ کابینہ نے ایک بین وزارتی کمیٹی تشکیل دی ، جو براڈشیٹ اسکینڈل میں مذکور افراد کی تفصیلات ظاہر کرے گی۔

وزیر اطلاعات شبلی فراز نے مزید کہا کہ وزیر اعظم نے اب دستیاب مواد کی مکمل جانچ پڑتال کے بعد ناموں کو عام کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ پاکستان میں عمران خان کے وزیر اعظم بننے کے بعد سابق وزرائے اعظم اور وزیروں کیخلاف مختلف کیس چل رہے ہیں اور ان میں سے کئی کو جیل کی سزا بھی کاٹنی پڑی ہے۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں