انصار اللہ

سعودی عرب کی یمن سے دشمنی، 25 افراد اور اداروں پر پابندی عائد

ریاض {پاک صحافت} سعودی عرب نے 25 غیر ملکی تنظیموں اور افراد کو بلیک لسٹ کر دیا ہے جن پر یمن کی عوامی تحریک انصار اللہ کی مالی معاونت کا الزام ہے۔

پاک صحافت نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق سعودی عرب کے سرکاری سیکورٹی کے سربراہ نے کہا ہے کہ یمن کی تحریک انصار اللہ کو مالی امداد فراہم کرنے یا مالی امداد کے لیے سہولتیں فراہم کرنے والے 25 افراد اور تنظیموں کو دہشت گردوں کی فہرست میں شامل کیا گیا ہے۔

سعودی عرب کی سرکاری خبر رساں ایجنسی ڈبلیو اے ایس نے دعویٰ کیا کہ یہ افراد اور تنظیمیں ایک بین الاقوامی نیٹ ورک کے طور پر کام کر رہی ہیں جس کا مقصد یمن کو غیر مستحکم کرنا ہے جسے ایران کی آئی آر جی سی کی حمایت حاصل ہے۔

سعودی عرب کی اس فہرست میں 10 افراد اور 15 کمپنیوں کے نام شامل ہیں جو کھانے پینے کی اشیاء کی خرید و فروخت میں سرگرم ہیں۔

سعودی عرب کی سرکاری خبر رساں ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق بلیک لسٹ کیے گئے افراد میں تین یمنی، دو ہندوستانی، دو شامی، ایک یونانی، ایک برطانوی اور ایک سمالیائی شہری شامل ہے۔

یہ بھی پڑھیں

گیلنٹ

گیلنٹ: اسرائیل نے گزشتہ 75 سالوں میں ایسی جنگ نہیں دیکھی

پاک صحافت صیہونی حکومت کے وزیر جنگ یوف گیلنٹ نے غزہ کی جنگ میں اسرائیلی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے