عدن ایئرپورٹ پر ہونے والے دھماکے میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 26 تک پہونچ گئی

عدن ایئرپورٹ پر ہونے والے دھماکے میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 26 تک پہونچ گئی

سعودی و صیہونی جارحیت کا شکار غریب عرب ملک یمن کے شہر عدن میں واقع ہوائی اڈے پر ہونے والے حملے میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 26 افراد جبکہ زخمیوں کی تعداد 40 تک پہونچ گئی۔

 جارح سعودی اتحاد کی آشیرباد سے یمن کی حال ہی میں قائم ہونے والی حکومت کے ارکان کے سعودی عرب سے عدن ائیرپورٹ پہنچتے ہی ائیرپورٹ دھماکوں اور فائرنگ سے گونج اٹھا جس کے نتیجے میں اب تک 26 افراد کے ہلاک ہونے کی اطلاعات ہیں، جن میں نائب وزراء بھی شامل ہیں۔

 سینیئر ہیلتھ افسر نے بتایا کہ اب تک 26 افراد ہلاک اور  60 زخمی ہیں جبکہ زخمیوں میں متعدد افراد کی حالت تشویش ناک ہے، سعودی جارح اتحاد کی سرپرستی میں بننے والی غیر نمائندہ حکومت کا وفد کی آمد کے موقع پر میڈیا بھی بڑی تعداد میں وہاں موجود تھا اور واقعے کی متعدد ویڈیوز سوشل میڈیا پر گردش کرررہی ہیں، وزیراعظم معین عبدالملک سعید سمیت کابینہ کے دیگر وزراء کو بحفاظت ائیرپورٹ سے محفوظ مقام پر منتقل کردیا گیا ہے۔

حملے کے وقت سعودی عرب کے یمن میں سفیر محمد سعید الجبیر بھی ائیرپورٹ میں موجود تھے جنہیں محفوظ مقام پر منتقل کردیا گیا ہے، کٹھ پتلی حکومت کے نائب وزیر برائے کھیل و نوجوانان حمزہ الکمالے کا کہنا ہے کہ نائب وزیر ٹرانسپورٹیشن بھی زخمی ہوئے ہیں۔

 ان کا کہنا تھا کہ حملے کی ذمہ داری کسی نے قبول نہیں کی ہے تاہم ہمیں حوثیوں پرالزام لگایا جا رہا ہے۔

 خیال رہے کہ سعودی عرب میں یمن کے مفرور صدر عبدالرب منصور ہادی کی حکومت اور علیحدگی پسند تنظیم سدرن ٹرانزیشنل کونسل (ایس ٹی سی) کے درمیان مل کر حکومت چلانے کا معاہدہ طے پایا ہے، جس کے بعد کابینہ کے ارکان سعودی عرب سے واپس آرہے تھے، ایس ٹی سی جنوبی یمن کی آزادی کیلئے تحریک چلاتی رہی ہے، تاہم حوثیوں کے خلاف حکومت کے ساتھ ہے۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں