بایئڈن

بائیڈن کو 17 سال قید ہو سکتی ہے

پاک صحافت امریکی صدر جو بائیڈن کے بیٹے ہنٹر بائیڈن کو کروڑوں ڈالر کی ٹیکس چوری کے الزام میں جیل جانا پڑ سکتا ہے۔

امریکہ میں آئندہ سال ہونے والے صدارتی انتخابات کے حوالے سے ملک میں سیاسی درجہ حرارت گرم ہونا شروع ہو گیا ہے۔ جبکہ سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ دوسری اننگز کھیلنے کی پوری کوشش کر رہے ہیں، موجودہ صدر جو بائیڈن تنازعات میں گھرے نظر آ رہے ہیں۔ صدر جو بائیڈن کے بیٹے ہنٹر بائیڈن پر 1.4 ملین ڈالر کی ٹیکس چوری کا الزام ہے جب کہ ہنٹر پرتعیش طرز زندگی گزارنے کے لیے لاکھوں ڈالر خرچ کر رہے ہیں۔ امریکی محکمہ انصاف نے جمعرات کو ہنٹر بائیڈن کے خلاف یہ الزام لگایا ہے۔

خبر رساں ادارے رائٹرز کی خبر کے مطابق سینٹرل کیلیفورنیا میں امریکی ڈسٹرکٹ کورٹ میں سنگین الزامات عائد کیے گئے ہیں۔ ہنٹر پر ایک سنگین جرم اور چھ بدعنوانیوں کا بھی الزام عائد کیا گیا ہے۔ الزامات ثابت ہونے پر ہنٹر کو 17 سال قید کی سزا ہو سکتی ہے۔ محکمہ انصاف نے کہا کہ بائیڈن کے خلاف تحقیقات جاری رہیں گی۔

اس طرح صدر جو بائیڈن اپنے بیٹے کی وجہ سے سرخیوں میں رہتے ہیں۔ ہنٹر پر جان بوجھ کر انکم ٹیکس ادا نہ کرنے کا الزام ہے۔ اس نے 2017 اور 2018 میں 1.5 ملین ڈالر سے زیادہ کے ٹیکس گوشوارے وقت پر فائل نہیں کیے تھے۔ الزامات میں کہا گیا ہے کہ ہنٹر بائیڈن نے ٹیکس ادا کرنے کے بجائے شاہانہ طرز زندگی گزارنے پر لاکھوں ڈالر خرچ کیے ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

حمایت

ایک آئرش اہلکار: فلسطین کے لیے ہماری حمایت استعمار اور قبضے کے مشترکہ تجربے پر مبنی ہے

پاک صحافت ڈبلن میں سن فین کے ایک قانون ساز، ڈیتی ڈولان نے اعلان کیا …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے