کناڈا

کینیڈا میں بھارتیوں پر تشدد تھمنے کا نام نہیں لے رہا، اب ایک خاتون کا قتل

پاک صحافت کینیڈا میں ہندوستانیوں کے خلاف جاری تشدد رکنے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ اس بار 40 سالہ سکھ خاتون کے قتل کا معاملہ سامنے آیا ہے۔

اطلاعات کے مطابق کینیڈا میں ایک 40 سالہ سکھ خاتون کو اس کے گھر میں گھس کر متعدد بار چاقو کے وار کر کے قتل کر دیا گیا ہے۔ اس معاملے میں پہلے آپ نے اس کے شوہر کو گرفتار کیا لیکن بعد میں اسے چھوڑ دیا گیا۔ قتل کے تفتیش کاروں نے مقتولہ کی شناخت 40 سالہ ہرپریت کور کے طور پر کی ہے اور اس کے شوہر، جسے پہلے گرفتار کیا گیا تھا، بھی 40 کی دہائی میں بتایا گیا ہے۔ اسی دوران قتل کی وجہ اور قاتل کا پتہ لگانے میں ناکام رہنے والی کینیڈین پولیس نے اب اپیل جاری کر دی ہے۔ قتل کی تحقیقات کرنے والی ٹیم نے کہا ہے کہ جس کے پاس کور یا اس کی موت کے بارے میں معلومات ہیں وہ آگے آئیں اور تفتیش کاروں کی مدد کریں۔ دوسری جانب ہرپریت کور کے اہل خانہ مقامی پولیس کی کارروائی سے ناراض دکھائی دے رہے ہیں۔ جبکہ کینیڈا میں مقیم ہندوستانیوں کا کہنا ہے کہ اس ملک میں ہندوستانی لوگوں کے ساتھ ہونے والے پرتشدد واقعات اب معمول بنتے جارہے ہیں۔ اس کی ذمہ دار خود کینیڈا کی حکومت بھی ہے جو بروقت سخت اقدامات کرتی تو ایسے واقعات کا سلسلہ رک جاتا۔

سرے برٹش کولمبیا، کینیڈا کا ایک شہر ہے جس کی تخمینہ آبادی 614,646 ہے۔ قبل ازیں، رائل کینیڈین ماؤنٹڈ پولیس نے کہا تھا کہ انہیں رات 9:30 بجے سے کچھ دیر پہلے نیوٹن کے علاقے میں واقع ایک رہائش گاہ پر بلایا گیا تھا کہ وہ چاقو مارے جانے کی اطلاع ہے۔ جب اہلکار موقع پر پہنچے تو انہوں نے خاتون کو شدید زخمی حالت میں پایا اور اسے اسپتال میں داخل کرایا۔ لیکن شدید زخموں کی وجہ سے خاتون نے اسپتال میں دم توڑ دیا۔ کور کے قتل کے بعد جہاں کینیڈا میں رہنے والے ہندوستانیوں میں خوف کا ماحول دیکھا جا رہا ہے وہیں غصہ بھی دیکھا گیا۔ لوگوں نے کینیڈین حکومت اور پولیس کے خلاف نعرے بھی لگائے۔

یہ بھی پڑھیں

نیوزیلینڈ

نیوزی لینڈ نے اسرائیل کے جرائم سے منسلک حماس کے اثاثے منجمد کر دیے

پاک صحافت نیوزی لینڈ نے فلسطین کے خلاف مغربی پالیسیوں کے مطابق اور غزہ میں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے