بھارت میں جمہوریت نہیں ہے: راہل گاندھی

راہل گاندھی

نئی دہلی {پاک صحافت} کانگریس لیڈر راہل گاندھی نے کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی نے ملک کی تمام ایجنسیوں اور اداروں کو اپنے کنٹرول میں رکھا ہوا ہے۔

بھارتی میڈیا کے مطابق راہول گاندھی نے کہا ہے کہ بھارت میں اس وقت جمہوریت نہیں ہے۔ کانگریس لیڈر راہل گاندھی نے کہا کہ آج ملک میں صرف چار لوگوں کی آمریت ہے۔

انہوں نے کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی نے ملک کی تمام ایجنسیوں اور اداروں کو اپنے کنٹرول میں رکھا ہوا ہے۔ جو بھی حکومت کے خلاف بولتا ہے اسے مرکزی ایجنسیوں سے ڈرایا جاتا ہے۔ راہل گاندھی نے کہا کہ لوگ ابھی تک اس بات کو نہیں سمجھ رہے ہیں لیکن ایک دن سمجھ میں آجائے گا۔

انہوں نے کہا کہ جو جمہوریت دہائیوں میں بنائی اور مضبوط ہوئی وہ آٹھ سالوں میں تباہ ہو گئی۔ اب ملک میں جمہوریت نام کی کوئی چیز نہیں ہے۔ راہول گاندھی نے کہا کہ جب ملک میں کانگریس کی حکومت تھی تو ہندوستان کی مرکزی ایجنسیاں اور دیگر آئینی ادارے غیر جانبدار رہتے تھے لیکن اب ایسا نہیں ہے۔

راہول نے کہا کہ جرمنی کے تمام ادارے ہٹلر کے ہاتھ میں تھے۔ وہ الیکشن بھی جیتتا تھا۔ آج ہندوستان کے تمام ادارے آر ایس ایس کے ہاتھ میں ہیں۔ آج اگر ہم مہنگائی اور بے روزگاری کے مسئلے پر بات کرنا چاہیں تو ہمیں جیلوں میں ڈال دیا جاتا ہے۔ ہمیں پارلیمنٹ میں ان مسائل پر بحث کرنے کی اجازت نہیں ہے۔

راہول گاندھی کے مطابق، میں جتنا زیادہ بولوں گا، مجھے اتنا ہی زیادہ تشدد کا نشانہ بنایا جائے گا۔ جو بھی حکومت کے خلاف بولے گا اس کے ساتھ بھی یہی سلوک کیا جائے گا۔ میں اپنا کام جاری رکھوں گا۔ ملک میں مہنگائی اور بے روزگاری پر بات کرتا رہوں گا۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں