ترجمان

اقتصادی جنگ کے ساتھ ساتھ فوجی جنگ کا بھی منہ توڑ جواب دیں گے: روس

ماسکو {پاک صحافت} روس نے کہا ہے کہ وہ مغرب کی اقتصادی جنگ کا جواب دینے کی صلاحیت رکھتا ہے اور کرتا رہے گا۔

کریملن کے ترجمان دیمتری پیسکوف نے کہا ہے کہ روس ان اقتصادی پابندیوں سے الگ تھلگ نہیں ہوا ہے جو مغرب نے امریکہ پر عائد کی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ امریکہ اور یورپ کبھی بھی روس کو تنہا نہیں کر سکیں گے۔ کریملن کے ترجمان کے مطابق روس کی توانائی کی برآمدات پر امریکی پابندیوں کے نتائج عالمی معیشت پر پڑیں گے۔

پیسکوف کا کہنا ہے کہ روس کے خلاف جو پابندیاں لگائی گئی ہیں ان سے ہمیں ایک وقفہ ملا ہے۔ انہوں نے یہ بھی نشاندہی کی کہ امریکہ کی جانب سے پابندیاں عائد کرنے کے باوجود ماسکو کے ساتھ بات چیت کے لیے کچھ چینلز باقی ہیں۔

یاد رہے کہ یوکرین کے خلاف روس کی فوجی کارروائی کے بعد امریکا اور یورپی ممالک نے ماسکو کے خلاف سخت پابندیاں عائد کر رکھی ہیں۔ ان پابندیوں کے ذریعے مغرب روس کی کمر توڑنا چاہتا ہے لیکن روس کا کہنا ہے کہ ہم ان پابندیوں کا مضبوطی سے مقابلہ کریں گے اور مغرب کی معاشی جنگ کا منہ توڑ جواب دیں گے۔

روسی حکام نے کہا ہے کہ انہیں پہلے ہی مغرب سے ایسی پابندیوں کی توقع تھی۔ ماسکو بھی مغرب کی اس طرح کی چالوں کا مقابلہ کرنے کے لیے کافی عرصے سے تیاری کر رہا ہے۔

روس نے گزشتہ ایک سال کے دوران ڈالر پر اپنا انحصار بہت کم کر دیا ہے۔ اس طرح ایسا لگتا ہے کہ اگر کشیدگی اسی طرح بڑھتی رہی تو روس کو فوجی اور اقتصادی دونوں محاذوں پر مغرب کا سامنا کرنا پڑے گا۔

یہ بھی پڑھیں

ظالم

ناروے نے نیتن یاہو کی گرفتاری کا اعلان کر دیا

پاک صحافت ناروے کے وزیر خارجہ کا کہنا ہے کہ صیہونی وزیر اعظم بنجمن نیتن …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے