الیکشن کمیشن

صدر مملکت انتخابی عمل کو مشکوک بنانے کی کوشش کررہے ہیں۔ الیکشن کمیشن

اسلام آباد (پاک صحافت) الیکشن کمیشن کا کہنا ہے کہ صدر مملکت انتخابی عمل کو مشکوک بنانے کی کوشش کررہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق الیکشن کمیشن آف پاکستان کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا کہ ایک اعلی عہدیدار انتخابی عمل کی شفافیت کو مشکوک بنانے کی کوشش کر رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ مناسب طریقہ نہیں ہے کیونکہ ای سی پی ملک میں آزادانہ اور منصفانہ انتخابات کو یقینی بنائے گا۔

صدر عارف علوی نے نگراں وزیراعظم کو خط بھیجا، جس میں آئندہ عام انتخابات کے سلسلے میں “بنیادی حقوق کے کٹاؤ اور تمام سیاسی جماعتوں کے لیے برابری کا میدان” کے حوالے سے پی ٹی آئی کے خدشات کا اظہار کیا گیا۔

بدھ کے روز صدر کے دفتر سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ یہ انتہائی اہمیت کا ہے کہ نگران حکومت نے تمام سیاسی جماعتوں کے لیے برابری کا میدان فراہم کرنے کے لیے ایک غیر جانبدار ادارے کے طور پر کوششیں کیں۔

انہوں نے پی ٹی آئی کے سیکرٹری جنرل عمر ایوب خان کی جانب سے بھیجا گیا خط وزیراعظم کو بھجوایا۔ علوی نے وزیر اعظم کے حالیہ ریمارکس کو “یقین دلانے والا” قرار دیا جس میں یہ یقین دہانی کرائی گئی کہ تمام رجسٹرڈ سیاسی جماعتوں کو آئندہ انتخابات میں حصہ لینے کے مساوی حقوق اور مواقع ملنے چاہئیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کی ریاست اور عوام کے لیے آگے بڑھنے کا واحد قابل عمل راستہ جمہوریت ہے، اس کا جوہر لوگوں کو سیاسی سرگرمیوں میں حصہ لینے اور آزاد میڈیا کے ذریعے اپنی رائے کا اظہار کرنے کا حق دینے میں ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں ایک گونج تھی کہ آزادانہ، منصفانہ اور قابل اعتماد انتخابات کے لیے تمام سیاسی جماعتوں اور رہنماؤں کو الیکشن لڑنے کا حق ہے اور یہ فیصلہ عوام پر منحصر ہے۔

یہ بھی پڑھیں

رانا ثناءاللہ

سیاستدانوں، عدلیہ اور اسٹیبلشمنٹ کو ماضی سے نکلنا پڑے گا۔ رانا ثناءاللہ

اسلام آباد (پاک صحافت) رانا ثناءاللہ کا کہنا ہے کہ سیاستدانوں، عدلیہ اور اسٹیبلشمنٹ کو ماضی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے