برطانیہ، جنوبی افریقہ سے براہ راست پروازوں کے عملے کے لئے تازہ ایس او پیز جاری

برطانیہ، جنوبی افریقہ سے براہ راست پروازوں کے عملے کے لئے تازہ ایس او پیز جاری

اسلام آباد (پاک صحافت) سول ایوی ایشن اتھارٹی (سی اے اے) نے برطانیہ، جنوبی افریقہ اور زمرہ ’سی‘ ممالک سے براہ راست پروازوں کے عملے کے لئے ایک تازہ معیاری آپریٹنگ طریقہ کار (ایس او پی) جاری کیا ہے۔ اتھارٹی نے پہلے ہی برطانیہ اور جنوبی افریقہ سے آنے والے مسافروں پر عارضی پابندیاں عائد کردی ہیں۔

نئے رہنما خطوط کے تحت فلائٹ عملے کو صرف برطانیہ ، جنوبی افریقہ اور دوسرے ممالک سے ہی پاکستان جانے کی اجازت ہوگی جب وہ اپنے سفر سے 72 گھنٹے قبل پی سی آر ٹیسٹ کی منفی سرٹیفیکیشن رکھتے ہوں تو انھیں ‘سی’ درجہ بندی میں رکھاگیاہے۔ہوائی اڈے پر علیحدہ گیٹ اور کاؤنٹروں کے ذریعہ متعلقہ حکام کے ذریعے آمد / روانگی سے متعلق متعلقہ رسمی ضوابط ہونگے۔ عملہ جانچ سے مستثنیٰ ہوگا۔

مزید پڑھیں: کورونا وائرس کے پیش نظر کراچی میں اسمارٹ لاک ڈاؤن نافذ کردیا گیا

تازہ ایس او پی کے تحت  پرواز کے عملے کو ہوائی اڈے پر اترنے پر براہ راست نامزد ہوٹلوں میں منتقل کیا جائے گا۔ وہ ہوٹلوں میں اپنے کمروں میں لازمی قرنطینہ مرحلے سے گزریں گے۔ مزید یہ کہ کورونا کی علامات رکھنے والے عملے کے کسی بھی ممبر کو اضافی جانچ کراناہوگی۔

سی اے اے نے کہا کہ پاکستان پہنچنے کے بعد صحت سے متعلق اضافی پابندیوں کی تعمیل برطانیہ ، جنوبی افریقہ اور دیگر ممالک سے براہ راست پروازوں کے عملہ کے لئے ،سی، کی درجہ بندی میں لازمی ہوگی۔ سی اے اے نے پاکستان میں داخل ہونے سے پہلے کووڈ 19 ٹیسٹ کی ضرورت سے 23 ممالک کے مسافروں کو بطور ‘A’ درجہ دیا ہے۔

تاہم ، زمرہ ‘بی’ ممالک کو اپنے پاکستان کے سفر کے آغاز سے 96 گھنٹے پہلے ہی ٹیسٹ کی ضرورت ہوگی۔ یہ بات قابل ذکر ہے کہ کورونا کے باعث نہ صرف پاکستان بلکہ دنیا بھر کے کئی ممالک میں سفری پابندیاں عائد کردی گئی تھیں جن میں اب نرمی دی جارہی ہے اور ضوابط کے تحت لوگوں کو سفر کی اجازت ہے۔

 

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں