ملبا

نیتن یاہو نے جنگ بندی کے لیے حماس کی شرائط کو مسترد کر دیا

پاک صحافت اسرائیلی وزیراعظم بنیامین نیتن یاہو نے جنگ بندی کے لیے حماس کی شرائط کو غیر منطقی قرار دیتے ہوئے مسترد کر دیا ہے۔

خبر رساں ایجنسی ارنا کی رپورٹ کے مطابق نیتن یاہو نے اپنے نئے دعوے میں کہا کہ حماس کی جانب سے جنگ بندی کی شرائط بے بنیاد ہیں۔ نیتن یاہو کے دفتر نے مذاکرات کی ناکامی کا ذمہ دار حماس کو ٹھہرانے کی کوشش کی اور کہا کہ حماس کے مطالبات اور شرائط غیر منطقی اور غیر منصفانہ ہیں اور ہم اس کی شرائط سے کابینہ کو آگاہ کریں گے۔

ادھر اسرائیلی یرغمالیوں کے اہل خانہ نے جنگ بندی مذاکرات کی ناکامی کا ذمہ دار اسرائیلی کابینہ کو ٹھہرایا ہے۔ یرغمالیوں کے لواحقین نے صہیونی حکام سے حماس کی شرائط تسلیم کرنے کا مطالبہ کیا ہے تاکہ ان کے یرغمالیوں کو رہا کیا جاسکے۔

حماس کی آزادی کی شرائط میں سے ایک شرط یہ ہے کہ اسرائیلی خواتین، بوڑھوں اور بیمار یرغمالیوں کی آزادی کے بدلے تقریباً ایک ہزار فلسطینی قیدیوں کو رہا کرنا پڑے گا۔ حماس نے یہ بھی کہا کہ جنگ بندی مستقل ہونی چاہیے۔

حماس کے رہنما اسامہ حمدان نے اس حوالے سے اپنی تقریر میں کہا ہے کہ ہم نے ایک تجویز دی ہے جس کا مقصد غزہ کی پٹی میں جنگ بندی کو مستقل کرنا، بے گھر لوگوں کو واپس جانے کی اجازت دینا اور غزہ کی پٹی میں انسانی بنیادوں پر امداد فراہم کرنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہماری تجویز کی اسرائیل کی مخالفت کا مطلب فلسطینی عوام کے خلاف اسرائیل کے جرائم کو جاری رکھنے پر اصرار کرنا ہے۔ اسی طرح انہوں نے کہا کہ اگر امریکی حکومت سنجیدہ اور دیانت دار ہے تو اسے اسرائیل کے حملوں کی مذمت کرنی چاہیے اور کم از کم غاصب کی حمایت کرنا چھوڑ دینا چاہیے۔

یہ بھی پڑھیں

اسرائیلی

اسرائیلی فوج کے ملٹری انٹیلی جنس ڈیپارٹمنٹ کے سربراہ نے استعفیٰ دے دیا

پاک صحافت صیہونی ذرائع ابلاغ نے اطلاع دی ہے کہ 7 اکتوبر 2023 کو فلسطینی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے