موساد کے قاتل یونٹ کا کمانڈر مارا گیا

فائرنگ

تل ابیب {پاک صحافت} موساد کے قاتل یونٹ کا کمانڈر عراق میں ڈرون حملے کے دوران مارا گیا۔

مہر خبررساں ایجنسی کے مطابق بعض عرب میڈیا اور سوشل نیٹ ورکس نے اطلاع دی ہے کہ "ایلک رون” نامی شخص جو کہ صیہونی حکومت کی موساد نامی تنظیم کے قاتل محکمہ کے کمانڈر کے طور پر کام کرتا تھا، ایک گھنٹہ قبل شمالی عراق میں ایک ڈرون حملے کے دوران مارا گیا۔

اس سلسلے میں "خالد سکف”; المیادین کے ایک تجربہ کار رپورٹر نے ٹویٹ کیا، "عراقی ویب سائٹس نے اطلاع دی ہے کہ صہیونی قاتل دستے کا سربراہ الرون نامی شخص شمالی عراق کے شہر اربیل میں ڈرون حملے کے دوران مارا گیا ہے۔”

یہ خبر عراق کے شہر اربیل میں امریکی ہیڈ کوارٹر پر ڈرون حملے کے چند گھنٹے بعد سامنے آئی ہے۔ اس خبر سے چند گھنٹے قبل، کچھ علاقائی ذرائع نے عراقی کردستان میں اربیل ہوائی اڈے کے مضافات میں امریکی قونصل خانے پر ڈرون حملے کی اطلاع دی۔ بمبار نے دوپہر کے کچھ دیر بعد شمالی شہر اربیل میں امریکی قونصل خانے کی عمارت کے سامنے حملہ کیا۔

بعض ذرائع نے تجویز دی ہے کہ اس کارروائی میں ایک سے زیادہ ڈرون شامل ہو سکتے ہیں۔

یہ بھی کہا جا رہا ہے کہ یہ حملہ امریکی قونصلیٹ سے دو کلومیٹر دور اربیل میں متحدہ عرب امارات کے قونصل خانے کے قریب انتہائی حساس حفاظتی علاقے میں ہوا اور ہدف سے دھواں اور آگ اٹھی۔

روئٹرز نے سیکیورٹی حکام اور کرد علاقائی حکام کے حوالے سے بھی بتایا کہ خودکش ڈرون نے شہر میں امریکی قونصل خانے کو نشانہ بنایا۔

عراقی السماریہ نیوز ویب سائٹ نے بھی اطلاع دی ہے کہ شہر میں امریکی قونصل خانے کے قریب ایک دھماکے کی آواز سنی گئی۔

ڈرون حملے کے بارے میں مزید تفصیلات جاری نہیں کی گئیں، تاہم عراقی پارلیمنٹ کی جانب سے تمام غیر ملکی اور امریکی فوجیوں کے انخلا کی منظوری کے بعد سے عراق کے مختلف حصوں میں امریکی قافلوں اور امریکی فوجی اڈوں پر حملے جاری ہیں۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں