ابراہیم رئیسی

داعش افغانستان میں ناکام امریکی مشن کو مکمل کرنا چاہتا ہے: صدر رئیسی

تہران {پاک صحافت} اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر سید ابراہیم رئیسی نے کہا ہے کہ تکفیری دہشت گرد گروہ داعش افغانستان میں ناکام امریکی مشن کو مکمل کرنے کے لیے یہ دہشت گرد کارروائیاں کر رہا ہے۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق ، اسلامی جمہوریہ ایران کے صدر سید ابراہیم رئیسی نے اتوار کو کابینہ کے اجلاس میں افغانستان کے معاملے میں حسن کاظمی کو اپنا نمائندہ مقرر کرنے کے بعد داعش سے کہا کہ وہ افغانستان میں امریکہ کے ناکام مشن کو پورا کرے۔ صدر رئیسی نے کہا کہ امریکہ داعش کے ذریعے مذہبی اختلافات اور فرقہ واریت کو ہوا دے کر افغانستان میں خونریزی کی حوصلہ افزائی کرنا چاہتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ افغانستان میں نمازیوں پر دہشت گردوں کے حملوں میں سیکڑوں افراد شہید اور زخمی ہوئے ہیں جس سے ایک بار پھر پیغمبر اسلام (س) کے پیروکاروں اور ان کی امت کے دلوں کو ٹھیس پہنچی ہے۔

ایران کے صدر نے متاثرین کے خاندانوں سے ہمدردی کا اظہار کرتے ہوئے اسلامی سکالرز ، مذہبی رہنماؤں اور بین الاقوامی تنظیموں سے مطالبہ کیا کہ وہ افغانستان میں جاری بحران پر توجہ دیں۔ سید ابراہیم رئیسی نے کہا کہ افغانستان میں عدم استحکام اور بدامنی پیدا کرنے کے امریکی منصوبے کے تحت کی جانے والی دہشت گردانہ کارروائیاں دائرہ کار میں بڑھ رہی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس ملک کے افسران سے توقع کی جاتی ہے کہ وہ قوم کی سلامتی کو یقینی بنانے میں اپنی ذمہ داری پوری کرتے ہوئے عوام کی سلامتی کی صلاحیتوں کو نظر انداز نہیں کریں گے۔ ایرانی صدر نے ایک بار پھر تہران کے موقف کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم ہمیشہ کی طرح افغان عوام کے ساتھ کھڑے ہیں اور افغانستان میں امن اور استحکام لانے کے لیے ہر ممکن تعاون کے لیے تیار ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

گیلنٹ

گیلنٹ: اسرائیل نے گزشتہ 75 سالوں میں ایسی جنگ نہیں دیکھی

پاک صحافت صیہونی حکومت کے وزیر جنگ یوف گیلنٹ نے غزہ کی جنگ میں اسرائیلی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے