ڈونلڈ ٹرمپ کا اب بھی اپنی شکست ماننے سے انکار، انتخابات میں دھاندلی کا کیس لے کر سپریم کورٹ پہنچ گئے

ڈونلڈ ٹرمپ کا اب بھی اپنی شکست ماننے سے انکار، انتخابات میں دھاندلی کا کیس لے کر سپریم کورٹ پہنچ گئے

امریکہ کی کئی وفاقی اور ریاستی عدالتوں سے انتخابات میں دھاندلی کے مقدمات خارج کیے جانے کے باوجود امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سپریم کورٹ پہنچ گئے ہیں جس سے یہ واضح ہوتا ہے کہ وہ اب بھی اپنی ذلت آمیز شکست کو قبول کرنے سے انکار کررہے ہیں۔

غیر ملکی خبررساں ایجنسی ایسوسی ایٹڈ پریس کے مطابق امریکہ کی کئی وفاقی اور ریاستی عدالتوں سے انتخابات میں دھاندلی کے مقدمات خارج کیے جانے کے باوجود امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سپریم کورٹ پہنچ گئے ہیں۔

اطلاعات کے مطابق صدر ٹرمپ نے پینسلوینیا کے انتخابی نتائج کے خلاف سپریم کورٹ میں پٹیشن دائر کی ہے جس میں استدعا کی گئی ہے کہ ڈاک کے ذریعہ ڈالے گئے ووٹوں میں بے ضابطگیاں ہیں اس لیے عدالت پینسلوینیا کی جنرل اسمبلی کو ازخود ریاست کے الیکٹرز کا انتخاب کرنے کی اجازت دے۔

ڈونلڈ ٹرمپ کے وکیل روڈی جولیانی نے میڈیا کو بتایا کہ پٹیشن میں جو بائیڈن کے حامی الیکٹرز کی تقرری روکنے کا بھی مطالبہ کیا گیا ہے اس کے علاوہ  درخواست گزار نے پٹیشن کی اہمیت کو دیکھتے ہوئے 6 جنوری سے قبل سماعت کی درخواست کی ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ سپریم کورٹ کی جانب سے پینسلوینیا کے انتخابی نتائج مسترد کرنے کا امکان نہ ہونے کے برابر ہے تاہم اگر ایسا ہو بھی جائے تو مجموعی طور پر انتخابی نتائج پر کوئی فرق نہیں پڑے گا اور نو منتخب صدر بائیڈن ہی کامیاب رہیں گے۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں