بولٹن

بائیڈن یوکرین کی جیت سے خوفزدہ ہیں: بولٹن

پاک صحافت جان بولٹن کا کہنا ہے کہ بائیڈن روس کو شکست دینا چاہتے ہیں لیکن یوکرین کی جیت سے خوفزدہ ہیں۔

امریکہ کے سابق قومی مشیر جان بولٹن نے کہا ہے کہ صدر جو بائیڈن چاہتے ہیں کہ یوکرین روس کے خلاف جنگ میں کامیاب ہو لیکن وہ یوکرین کی جیت سے پریشان بھی ہیں۔

امریکی قومی سلامتی کے سابق مشیر اور اقوام متحدہ میں اس ملک کے سابق نمائندے بولٹن نے ایک مضمون لکھا ہے جو وال اسٹریٹ جرنل میں شائع ہوا ہے۔ بولٹن کے مضمون کا عنوان ہے، “مغرب یوکرین کو روس کے خلاف جیتنے کی اجازت کیوں نہیں دے گا”۔

اس مضمون میں وہ لکھتے ہیں کہ امریکہ اور مغرب نے یوکرین کو روس کے خلاف جنگ چھیڑنے کے لیے آگے بڑھایا ہے لیکن اس کا ایک ہاتھ پیچھے باندھ دیا ہے۔ بولٹن لکھتے ہیں کہ بائیڈن چاہتے ہیں کہ یوکرین جیت جائے لیکن وہ اپنی جیت کے لیے پریشان بھی ہیں۔ یہ وائٹ ہاؤس کی موجودہ وقت کی غیر ضروری ضرورت کے لیے پالیسی ہے۔

ہم اس وقت یوکرین کی حمایت کر رہے ہیں لیکن اتنا نہیں کہ یہ زیادہ موثر ہو۔ یاد رہے کہ یوکرین کئی بار اپنے مغربی دوستوں سے زیادہ سے زیادہ ہتھیار بھیجنے کا مطالبہ کر چکا ہے۔ یوکرین کی اہم امداد کے طور پر امریکہ نے اسے بہت سارے ہتھیار بھی دیے لیکن وائٹ ہاؤس یوکرین کو F-16 لڑاکا طیارے دینے سے ہچکچا رہا ہے۔

روسی حکام اور بہت سے مغربی میڈیا یوکرین کی جنگ کو ایک پراکسی جنگ کے طور پر دیکھتے ہیں جس میں یوکرین مغرب کی جانب سے روس سے لڑ رہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

مظاہرہ

رائے شماری کے نتائج کے مطابق: برطانوی عوام کی اکثریت اسرائیل پر ہتھیاروں کی پابندی اور غزہ میں جنگ بندی چاہتے ہیں

پاک صحافت انگلینڈ میں کئے گئے تازہ ترین سروے کے نتائج سے پتہ چلتا ہے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے