برطانوی وزیر خارجہ

یوکرین پر روس کے مبینہ حملے کے نتائج کے بارے میں برطانوی دھمکیوں کا اعادہ

لندن {پاک صحافت} یوکرین پر روس کے مبینہ حملے کے نتائج کے بارے میں برطانوی دھمکیوں کا اعادہ کرتے ہوئے برطانوی وزیر خارجہ نے کہا کہ ایسا اقدام ماسکو کے خلاف انتہائی موثر پابندیوں کا باعث بنے گا۔

پاک صحافت نیوز ایجنسی کے بین الاقوامی گروپ کے مطابق، برطانوی وزیر خارجہ لز ٹیریس نے جمعرات کو دعویٰ کیا کہ اگر روس نے یوکرین پر حملہ کیا تو ماسکو کے خلاف انتہائی موثر پابندیاں عائد کی جائیں گی۔

خبر رساں ادارے روئٹرز کے مطابق ٹیرس نے برطانوی پارلیمنٹ کو بتایا کہ “ہم اس مہم کو قبول نہیں کرتے جو روس نے اپنے جمہوری پڑوسیوں کو ختم کرنے کے لیے شروع کی ہے۔”

انہوں نے ماسکو کے خلاف الزامات اور جاسوسی کا اعادہ کرتے ہوئے کہا، “وہ غلط طریقے سے یوکرین کو اپنے مخالفانہ موقف کو جواز فراہم کرنے کے لیے ایک خطرے کے طور پر پیش کر رہے ہیں۔”

انہوں نے اپنے غیر مصدقہ الزامات کا اعادہ کرتے ہوئے کہا کہ روس یہاں جنگ میں ہے۔ “نیٹو ہمیشہ سے ایک دفاعی اتحاد رہا ہے۔”

ٹیرس نے مزید دھمکی دی کہ یوکرین پر کسی بھی روسی حملے کے “سنگین نتائج ہوں گے، جس میں روس کے مفادات اور معیشت پر بھاری قیمتیں عائد کرنے کے لیے ٹھوس پابندیاں بھی شامل ہیں۔”

انہوں نے کہا کہ “برطانیہ اور اس کے شراکت دار ان پابندیوں پر کام کر رہے ہیں، جن میں بہت موثر اقدامات شامل ہیں جو مالیاتی شعبے اور روسی عوام کو نشانہ بنائیں گے۔”

برطانوی وزیر خارجہ نے کہا کہ وہ اس ماہ کیف کا سفر کریں گے، یہ دعویٰ کرتے ہوئے کہ “روس کے دھمکی آمیز رویے کے خلاف جوابی کارروائی کے لیے نیٹو کا اتحاد بہت ضروری ہے۔”

انہوں نے آنے والے مہینوں میں یوکرین پر ممکنہ روسی حملے کے بارے میں حالیہ قیاس آرائیوں کے ایک ہدف کی طرف بھی اشارہ کیا اور کہا کہ برطانیہ نارتھ اسٹریم 2 گیس پائپ لائن منصوبے کو یورپ تک شروع کرنے کا مخالف ہے۔

“یورپ کو روسی گیس پر اپنا انحصار کم کرنا چاہیے،” ٹیرس نے کہا۔ “برطانیہ رولنگ اسٹریم 2 کا مخالف ہے، اور میں اس منصوبے کے اسٹریٹجک خطرات کو اجاگر کرنے کے لیے اتحادیوں اور شراکت داروں کے ساتھ کام کر رہا ہوں۔”

روس نے بارہا اس بات پر زور دیا ہے کہ یوکرین کی حکومت مشرقی یوکرین میں روس نواز اور روس نواز علاقوں کے خلاف کریک ڈاؤن کر رہی ہے، اور مغربیوں سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ اپنے انسانی حقوق کے دوہرے معیارات کو ترک کر دیں۔

تاہم مغربی میڈیا نے حال ہی میں ایک میڈیا جاسوس میں اعلان کیا تھا کہ روس یوکرین پر بھرپور حملہ کرنے کا ارادہ رکھتا ہے۔ ماسکو نے ان الزامات کی تردید کی ہے اور خبردار کیا ہے کہ اگر کییف حکومت نے یوکرین میں روس نواز علاقے کے رہائشیوں پر اپنے حملے جاری رکھے تو وہ سخت جوابی کارروائی کرے گا۔

امریکہ اور روس کے ساتھ ساتھ ماسکو اور نیٹو کے ارکان کے درمیان ملاقاتیں اس ماہ کے شروع میں ہونے والی ہیں تاکہ روس اور مغرب کے درمیان کشیدگی میں اضافہ ہو سکے۔

یہ بھی پڑھیں

نیوزیلینڈ

نیوزی لینڈ نے اسرائیل کے جرائم سے منسلک حماس کے اثاثے منجمد کر دیے

پاک صحافت نیوزی لینڈ نے فلسطین کے خلاف مغربی پالیسیوں کے مطابق اور غزہ میں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے