کراچی اور دیگر علاقوں میں ہزارہ برادری کے حق میں دھرنے جاری

کراچی اور دیگر علاقوں میں ہزارہ برادری کے حق میں دھرنے جاری

کراچی (پاک صحافت) بدھ کے روز بھی کراچی میں متعدد سڑکیں بند کردی گئیں کیونکہ بلوچستان کے علاقے مچھ میں شیعہ ہزارہ کان کنوں کے قتل کے خلاف میٹروپولیس کے مختلف علاقوں تک احتجاج  پھیل گیا۔ٹیلی ویژن فوٹیج میں مظاہرین کو سڑکوں پر نکلتے ہوئے ، ٹائر اور لکڑی جلا کر ٹریفک میں خلل ڈالتے ہوئے دیکھاجاسکتاہے۔

تفصیلات کے مطابق پولیس اپ ڈیٹ کے مطابق ، آج کا احتجاجی مظاہرہ ، جو مجلس وحدت المسلمین (ایم ڈبلیو ایم) کے زیر اہتمام تھا ،عباس ٹاؤن ، ابوالحسن اصفہانی روڈ ، کامران چورنگی سمیت شہر بھر میں متعدد مقامات پر ہوا۔ آئی جوہر ، نارتھ کراچی میں پاور ہاؤس چورنگی ، ایم اے جناح روڈ ، شراہ فیصل اور ملیر 15، شاہرا فیصل کا ایک ٹریک بھی ٹریفک کے لئے بند کردیا گیا تھا۔

مزید پڑھیں: چیلنجز سے نمٹنے کیلئے قومی ادارے اپنا کردار ادا کریں: آرمی چیف

کراچی ٹریفک پولیس نے کہا کہ احتجاج شہر کے دیگر علاقوں میں چورنگی سمیت پھیل گیا ہے۔ پولیس بیان  میں کہا گیا ہے کہ سنیما سے گرو مندر تک جانے والی سڑک کو ٹریفک کے لئے بند کردیا گیا تھا اور لوگوں کو بازار کا راستہ استعمال کرنے کی ہدایت کی تھی۔ڈی آئی جی ٹریفک نے دیگر عہدیداروں کے ہمراہ شہر کے متعدد علاقوں کا دورہ کیا اور ٹریفک کی روانی کو جاری رکھنے کے لئے کوششوں کا جائزہ لیا۔

انہوں نے بتایا کہ کراچی بھر کے تمام مقامات پر ٹریفک پولیس اہلکاروں کی بھاری نفری تعینات کی جارہی ہے۔ایک روز قبل ، ہزارہ برادری کے افراد نے عباس ٹاؤن سمیت کراچی کے مختلف علاقوں اور کراچی پریس کلب کے باہر دھرنا دیا۔ہزارہ برادری کے 200 سے زیادہ مرد ، خواتین اور بچے کے پی سی میں جمع ہوئے اور وزیر اعظم عمران خان اور چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ ان کی برادری کی حفاظت کو یقینی بنائیں۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں