مردم شماری پر پاک سرزمین پارٹی کا کراچی بند کا انتباہ

مردم شماری پر پاک سرزمین پارٹی کا کراچی بند کا انتباہ

کراچی (پاک صحافت) پاک سرزمین پارٹی (پی ایس پی) کے چیئرمین سید مصطفیٰ کمال نے انتباہ دیا ہے کہ اگر شہر میں منصفانہ مردم شماری نہ کی گئی تو ان کی پارٹی کراچی کو تالہ بند کردے گی۔

کراچی پریس کلب (کے پی سی) کے سامنے ایک بڑے جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کمال  نے کہاکہ  پچھلے ستر سال میں کبھی بھی مناسب گنتی نہیں کی گئی کیونکہ ریاست ہماری صحیح گنتی سے خوفزدہ ہے۔ آپ کراچی میں احساس محرومی بڑھا کر کل کے دہشت گرد پیدا کررہے ہیں، لیکن میں پیچھے ہٹنے والا نہیں ہوں اور اپنی آخری سانس تک لڑوں گا ۔ان کاکہناتھا’’آج کا احتجاج محض ایک ٹریلر ہے، اگر مردم شماری منصفانہ طور پر نہیں کی گئی تو ہم شہر کو بند کردیں گے،ہمارے مطالبے کی منظوری تک ہم پورے شہر میں دھرنا دیں گے‘‘۔

مزید پڑھیں: عمران خان فنڈنگ کیس ،اپوزیشن کا احتجاج کا اعلان

انہوں نے مطالبہ کیا کہ 2017 کی مردم شماری کو متنازعہ قرار دیا جائے کیونکہ اگر ایسا نہیں ہوا تو "ہماری اگلی سات نسلیں” صحیح طور پر شمار نہیں کی جائیں گی۔ریلی نرسری سے شروع ہوئی اور خواتین اور بچوں سمیت لوگوں کی ایک بڑی تعداد موٹرسائیکلوں پر کاروں ، بسوں اور ٹرکوں میں شریک پارہ فیصل کے راستے کے پی سی کی طرف روانہ ہوئی ، جو ریلی کا اختتامی مقام تھا ، جہاں ریکارڈ کے لئے ایک بڑا احتجاجی مظاہرہ کیا گیا ۔

ان کے انتخابی نشان ، ڈولفن کے ساتھ لکھے ہوئے نعرے لگاتے اور پی ایس پی کے سہ رخی رنگی جھنڈے لہراتے ہوئے ، ریلی میں شامل شرکاء نے ‘متنازعہ مردم شماری کو قانونی حیثیت دینے سے روکیں’ ، جیسے کچھ مطالبات کے ساتھ لکھے ہوئے بینرز اور پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے۔کمال اور دیگر لیڈران ایک ٹرک پر سوار تھے جو ریلی کی قیادت کررہے تھے۔مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کمال نے وزیر اعظم عمران خان سے 2017 کی مردم شماری کے نتائج کو قبول کرنے کا فیصلہ واپس لینے کو کہا۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں