سوشل میڈیا پر کنٹرول نہیں، اس لیے ہتکِ عزت قانون لانا ضروری ہے، عطاء تارڑ

اسلام آباد (پاک صحافت) وفاقی وزیرِ اطلاعات عطاء تارڑ کا کہنا ہے کہ سوشل میڈیا پر کوئی کنٹرول نہیں ہے، اس لیے ہتکِ عزت قانون لانا ضروری ہے۔ اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عطاء تارڑ نے کہا کہ پاکستان میں لوگ ہتکِ عزت کے کیسز برطانیہ جا کر لڑتے ہیں کیوں کہ انہیں یہاں انصاف کی اُمید نہیں ہوتی۔

انہوں نے کہا کہ کوئی بھی کسی پر کسی بھی قسم کا الزام لگا دیتا ہے اور کوئی پوچھنے والا نہیں۔ وزیرِ اطلاعات کا کہنا ہے کہ وزیرِ اعظم کا دورۂ چین انتہائی کامیاب رہا، پاک چین دوستی ہر دور میں لازوال رہی ہے، پاکستان اور چین کے درمیان یہ نئے دور کا آغاز ہے۔ عطاء تارڑ نے کہا کہ چین کے ساتھ ان سیکٹرز پر بھی بات ہوئی جن پر پہلے کبھی نہیں ہوئی، چین کے صدر نے سی پیک کو اپ گریڈ کرنے کی بات کی، چین کے دورے میں 32 کاروباری معاہدے ہوئے۔

ان کا کہنا ہے کہ مہنگائی 11 فیصد پر آگئی ہے، زرمبادلہ ذخائر بھی بڑھے اور روپے کی قدر بھی مستحکم ہے، پاک چین بزنس کانفرنس میں 500 کاروباری شخصیات نے شرکت کی۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ وزیرِ اعظم کے ساتھ آرمی چیف کا چین جانا دلیل ہے، ہم نے سیکیورٹی معاملات کو سنجیدگی کے ساتھ ڈیل کرنے کا عہد کیا ہے، پاک چین تعلقات کو کوئی نقصان نہیں پہنچا سکتا، آج دنیا پاکستان میں سرمایہ کاری اور تجارت کے لیے معاہدے کرنے کو تیار ہے، دہشت گردی کے خلاف جنگ میں پاک فوج کردار ادا کر رہی ہے۔

یہ بھی پڑھیں

کامران ٹیسوری

گورنر سندھ کا 300 یونٹ بجلی استعمال کرنے والوں کو سولر دینے کا اعلان

کراچی (پاک صحافت) گورنر سندھ کامران ٹیسوری کا کہنا ہے کہ 300 یونٹ تک بجلی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے