اگر انا کا چہرہ ہوتا تو وہ عمران خان کاہوتا:مریم نواز

مریم نواز نے استعفے سے متعلق فیصلہ پی ڈی ایم پر چھوڑ دیا

لاہور (پاک صحافت)  پاکستان مسلم لیگ نواز (مسلم لیگ ن) کی نائب صدر مریم نواز نے ہزارہ برادری کے سوگواروں پر وزیر اعظم عمران خان کے بیان پر سخت تنقید کی ہے۔وزیر اعظم عمران نے کہا تھا کہ کوئٹہ آنے کے لئے انہیں بلیک میل نہیں کیا جائے گا اور خواتین اور بچوں سمیت سوگواروں کی عیادت کریں گے۔

ہزارہ ٹاؤن کے قریب مغربی بائی پاس کے علاقے کے قریب شدید موسمی صورتحال میں 11 مزدوروں کی لاشوں کے ساتھ بیٹھے ہیں اوران کا استدلال ہے کہ وہ تبھی لاشوں کو دفن کریں گے جب وزیر اعظم ان کے پاس آئیں گے۔مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما مفتاح اسماعیل کی کراچی میں رہائش گاہ پر پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مریم نے کہا کہ میں نےپوری زندگی میں اس طرح کا جہالت اور انا کا مظاہرہ کبھی نہیں دیکھا۔

مزید پڑھیں: اپوزیشن رہنماؤں نے ہزارہ برادری سے متعلق وزیراعظم کے بیان کو افسوسناک قرار دیا

انہوں نے وزیر اعظم سے پوچھا کہ کیا اسے لگتا ہے کہ وہ ’بلیک میلرز‘ ہیں۔مسلم لیگ (ن) رہنما نے کہا کہ وزیر اعظم نے اپنے ریمارکس سے پوری قوم کو دنگ کر دیا ہے ،کیا وہ بھی اسی طرح سوچتے اگر ان کا خاندان ہوتا؟۔ان کاکہناتھا’’کیا ان کی (ہزارہ کوئلہ سازوں) زندگی کی کوئی قیمت نہیں ہے؟‘‘۔

مریم نے کہا’’اگر سیکورٹی کا خطرہ ہوتا تو آپ کو ‘منتخب’ ہونے سے پہلے سو بار سوچنا چاہئے تھا‘‘۔انہوں نے کہا کہ ہمیں بھی سیکورٹی کا خطرہ تھا ، لیکن ہم پھر بھی گئے ،اگر انا کا چہرہ ہوتا تو یہ عمران خان کا ہوتا۔انہوں نے کہا ’’پھر آپ کہتے ہیں کہ فوج کو سب کچھ معلوم ہے،کیا انہیں معلوم ہے کہ آپ بزدل ہیں؟ کیا وہ جانتے ہیں کہ آپ کی نااہلی نے ان کی بہت زیادہ قیمت مہنگی کردی ہے؟ کیا آپ کے ‘سلیکٹرز’ جانتے ہیں کہ آپ نے معیشت اور خارجہ پالیسی کو تباہ کیا ہے؟‘‘۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں