عوام

عالمی اداروں کا بیان، غزہ والوں کے لیے کوئی جگہ محفوظ نہیں

پاک صحافت یونیسیف کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر نے غزہ کی پٹی میں حالات زندگی کے بارے میں خبردار کرتے ہوئے اس بات پر زور دیا ہے کہ غزہ کی پٹی کو بچوں کے لیے دنیا کا خطرناک ترین مقام سمجھا جاتا ہے۔

یونیسیف کی ایگزیکٹو ڈائریکٹر کیتھرین رسل نے کہا کہ غزہ کی پٹی ایک بار پھر بچوں کے رہنے کے لیے دنیا کی خطرناک ترین جگہ بن گئی ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ سخت سردی کا موسم آنے والا ہے اس لیے جس کے پاس بھی ان بچوں کی مدد کے لیے ضروری وسائل اور امکانات ہیں وہ مدد کرے۔

اس سے قبل اقوام متحدہ کے ڈپٹی سیکریٹری جنرل مارٹن گریفتھس نے بھی کہا تھا کہ غزہ کی پٹی کے مکینوں کے لیے کوئی محفوظ جگہ نہیں ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ غزہ کے تمام مکین جن میں خواتین اور بچے بھی شامل ہیں، مسلسل دوسرے ماہ بھی اسرائیلی حملوں کے خوف میں موت، تباہی اور بیماری کے سائے میں زندگی گزار رہے ہیں۔

گریفتھس نے کہا کہ گزشتہ ہفتے ثابت ہوا کہ جب ہتھیاروں کو خاموش کر دیا جاتا ہے تو کیا ہوتا ہے اور خان یونس کی صورت حال اس بات کی دل دہلا دینے والی یاد دہانی تھی کہ جب ہتھیاروں کو خاموش نہیں کیا جاتا تو کیا ہوتا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

گیلنٹ

گیلنٹ: اسرائیل نے گزشتہ 75 سالوں میں ایسی جنگ نہیں دیکھی

پاک صحافت صیہونی حکومت کے وزیر جنگ یوف گیلنٹ نے غزہ کی جنگ میں اسرائیلی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے