ناصر

امریکہ غزہ جنگ بندی کی راہ میں رکاوٹ ہے: ایران

پاک صحافت وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا ہے کہ امریکہ غزہ میں جنگ بندی کی راہ میں رکاوٹ ہے۔

وزارت خارجہ کے ترجمان ناصر کنانی نے کہا کہ حالیہ ہفتوں کے دوران کئی ممالک نے اتفاق کیا اور غزہ میں جنگ بندی کے حق میں تھے لیکن مزاحمت کی جانب سے امریکی حکومت کو جو زوردار تھپڑ دیا گیا ہے اس سے جنگ ختم نہیں ہو رہی۔

پاک صحافت کی رپورٹ کے مطابق، ناصر کنعانی نے فلسطین میں رونما ہونے والی تبدیلیوں کا جائزہ لینے کے لیے منعقدہ ایک اجلاس میں کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے گزشتہ 44 سالوں کے دوران جو کچھ بھی کیا ہے وہ دنیا کے تسلط پسند نظام کی دشمنی کے ساتھ کیا ہے۔ ہم ان کامیابیوں کو معجزات سمجھتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دنیا بھر کے لوگ ان کامیابیوں پر سوال اٹھاتے ہیں اور پوچھتے ہیں کہ ایران نے ظالمانہ پابندیوں کے تحت یہ قابل فخر کامیابیاں کیسے حاصل کی ہیں؟ اسی طرح انہوں نے کہا کہ ایران نے نہ صرف ترقی اور پیشرفت کی ہے بلکہ شام اور عراق کی مزاحمتی قوتوں کی اخلاقی اور روحانی مدد کی ہے اور اپنے آزادی پسند نظریات کو ان تک پہنچایا ہے۔

وزارت خارجہ کے ترجمان ناصر کنانی نے اس بات پر زور دیا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ ایران کے اسلامی انقلاب کی کامیابی ایک اہم واقعہ تھا اور وہ بھی دنیا میں ایک نئے بلاک کی تشکیل تھی اور اسلامی انقلاب نے پوری دنیا کے لوگوں پر ثابت کر دیا کہ ایک ہی رہ سکتا ہے۔ دوسری طاقتوں پر انحصار کیے بغیر آزاد اور خود مختار۔ انہوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے دنیا کی آزادی پسند تحریکوں کو نئی زندگی بخشی ہے اور تسلط پسند ممالک کے تسلط میں مبتلا قوموں کو نیا ولولہ اور ولولہ بخشا ہے۔ وزارت خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ ہم سب اس بات کے گواہ ہیں کہ ایران کے اسلامی انقلاب کی کامیابی سے قبل فلسطین کا مسئلہ پس پردہ تھا لیکن اسلامی انقلاب نے اسے نئی زندگی دی۔

یہ بھی پڑھیں

گیلنٹ

گیلنٹ: اسرائیل نے گزشتہ 75 سالوں میں ایسی جنگ نہیں دیکھی

پاک صحافت صیہونی حکومت کے وزیر جنگ یوف گیلنٹ نے غزہ کی جنگ میں اسرائیلی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے