مزاحمت

مزاحمتی فورسز کی جوابی کارروائی سے اسرائیل حیران، کمسن فلسطینی لڑکی شہید

پاک صحافت جنین پر صہیونی فوج کے دہشت گردانہ حملے کے نتیجے میں زخمی ہونے والی 14 سالہ فلسطینی لڑکی زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے شہید ہو گئی ہے۔

موصولہ اطلاعات کے مطابق اس وقت اسرائیل فلسطین کے مغربی کنارے میں کسی بھی سطح پر مظالم ڈھا رہا ہے۔ اسے نہ تو اقوام متحدہ کے کسی قانون سے کوئی سروکار ہے اور نہ ہی وہ انسانی حقوق کی کھلم کھلا خلاف ورزی سے پیچھے ہٹ رہا ہے۔ یہ غیر قانونی اور دہشت گرد حکومت مسلسل فلسطینیوں پر مظالم کی نئی داستانیں لکھ رہی ہے۔ فلسطینی خبر رساں ایجنسی سماء نے رپورٹ کیا کہ سودیل غسان، ایک 14 سالہ لڑکی جو مغربی کنارے کے جنین میں واقع ایک ہسپتال کے آئی سی یو یونٹ میں زیر علاج تھی، بدھ کی صبح انتقال کر گئی۔

موصولہ اطلاعات کے مطابق سدیل غسان کی شہادت کے بعد جنین میں دہشت گرد صہیونی فوج کے ہاتھوں شہید ہونے والوں کی تعداد 7 ہو گئی ہے جب کہ 21 افراد کی حالت تشویشناک بتائی جاتی ہے۔ آپ کو بتاتے چلیں کہ بنجمن نیتن یاہو کی قیادت میں اسرائیل کی نئی حکومت کے قیام کے بعد سے اسرائیل مسلسل اشتعال انگیز کارروائیاں کر رہا ہے۔ حالیہ پانچ روزہ غزہ جنگ اسرائیل کے ان اشتعال انگیز اقدامات کا نتیجہ تھی اور اس کے بعد بھی اسرائیل کی جانب سے اشتعال انگیز سرگرمیوں کا سلسلہ ابھی تک نہیں رکا۔

یہ بھی پڑھیں

گیلنٹ

گیلنٹ: اسرائیل نے گزشتہ 75 سالوں میں ایسی جنگ نہیں دیکھی

پاک صحافت صیہونی حکومت کے وزیر جنگ یوف گیلنٹ نے غزہ کی جنگ میں اسرائیلی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے