فلسطین

غاصب صیہونی کے ہاتھوں 2 فلسطینی نوجوانوں کی شہادت

پاک صحافت صیہونی غاصب حکومت کی فورسز نے تین فلسطینی نوجوانوں کو لے جانے والی کار پر گولی مار کر ان میں سے دو کو شہید کردیا۔

پاک صحافت نے فلسطینی خبررساں ایجنسی سما کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ دو نوجوان خالد انبار الدباس اور باسل الباسباس شہر کے قریب تعلیمی علاقے میں ایک گاڑی پر صیہونی حکومت کی قابض فوج کی فائرنگ کے نتیجے میں شہید ہو گئے۔ رام اللہ اور ایک اور مسافر زخمی ہوئے۔

صہیونی فوج کے ترجمان نے دعویٰ کیا کہ ابتدائی تحقیقات کی بنیاد پر یہ تینوں نوجوان ان فورسز کے خلاف کارروائیاں کرنے کی کوشش کر رہے تھے۔

اسرائیلی فوج کے ریڈیو نے یہ بھی دعویٰ کیا ہے کہ اس گاڑی پر فائرنگ اس وقت ہوئی جب اس میں سوار نوجوان “اغز” یونٹ کے اسرائیلی فوجیوں کے ایک گروپ پر چڑھ دوڑنے کی منصوبہ بندی کر رہے تھے جو “الجلزون” کیمپ کے قریب علاقے میں مشن پر تھے۔

اسرائیلی حکومت کی قابض فوج نے اس کار کو گولی مارنے کے بعد ضبط کر لیا۔

یہودیوں کی تعطیلات کے ساتھ ہی اور فلسطینی مزاحمتی کارروائیوں میں اضافے کے خوف سے صیہونی حکومت نے دریائے اردن کے مغربی کنارے میں اپنی موجودگی کو مضبوط کرتے ہوئے اسے ایک بند فوجی علاقہ قرار دیا ہے۔

گزشتہ دو مہینوں میں بالخصوص غزہ کی پٹی پر اس حکومت کی تین روزہ فوجی جارحیت کے بعد صیہونی حکومت کے رہنماؤں کو مغربی کنارے میں فلسطینی عوام کی مسلح اور عوامی مزاحمت میں اضافے کا سامنا ہے۔

یہ بھی پڑھیں

گیلنٹ

گیلنٹ: اسرائیل نے گزشتہ 75 سالوں میں ایسی جنگ نہیں دیکھی

پاک صحافت صیہونی حکومت کے وزیر جنگ یوف گیلنٹ نے غزہ کی جنگ میں اسرائیلی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے