علاقے سے بڑی خبر، امریکہ حزب اللہ سے بات کرنا چاہتا ہے، حزب اللہ کا کیا جواب ہے؟

حزب اللہ

بیروت {پاک صحافت} ایک باخبر لبنانی ذریعے نے کہا ہے کہ واشنگٹن نے حزب اللہ سے بعض مسائل پر بات چیت کی اپیل کی ہے اور حزب اللہ نے انتہائی سختی کے ساتھ امریکی اپیل کو ٹھکرا دیا ہے۔

پاک صحافت نیوز ایجنسی کی رپورٹ کے مطابق لبنان کے ایک اخبار نے خبر دی ہے کہ واشنگٹن نے حزب اللہ کے عہدیداروں سے مذاکرات کی اپیل کی ہے۔

الاخبار اخبار نے منگل کے روز خبر دی ہے کہ بعض ثالثوں نے امریکی حکومت کا پیغام حزب اللہ تک پہنچایا ہے اور تحریک سے اپیل کی ہے کہ وہ لبنان کے بعض امور پر نظرثانی کرے۔

اخبار الاخباریہ نے تفصیلات بتائے بغیر دعویٰ کیا کہ حزب اللہ نے میڈیا کو بتایا کہ وہ امریکہ سے کسی بھی طرح سے رابطہ نہیں کرے گا۔

دوسری جانب حزب اللہ کے ایک سینیئر اہلکار نے کہا ہے کہ امریکا بار بار رابطے کی کوشش کر رہا ہے۔

حزب اللہ کے سینیئر اہلکار سید صفی الدین نے کہا کہ امریکا حزب اللہ کے ساتھ رابطے میں رہنے کی کوشش کر رہا ہے لیکن حزب اللہ اس کی مخالفت کر رہی ہے۔

انہوں نے اس بات کا ذکر کرتے ہوئے کہ امریکی انتشار پھیلانا چاہتے ہیں کہا کہ امریکہ لبنان پر تسلط جمانا چاہتا ہے جس کا اصل ہدف اسرائیل کو خطے میں سلامتی فراہم کرنا ہے۔

سید صفی الدین نے کہا کہ خطے اور لبنان میں امریکیوں کے پاس آپشنز ہیں جو وہ شروع سے استعمال کر رہے ہیں اور اس کے مقابلے میں ہمارے پاس بھی آپشن موجود ہیں جس کے مطابق ہم عمل کرتے ہیں۔

انہوں نے حزب اللہ کے حکومتی اجلاسوں میں شرکت کے فیصلے کے بارے میں کہا کہ یہ ایک اندرونی فیصلہ تھا جس کا ایران سعودی عرب مذاکرات میں پیش رفت سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں