خراج عقیدت

ایران قبضہ کرنے کی سرزمین نہیں، ہم نے دشمن کو کمزور کیا، تمام آپشنز میز پر ہیں، یہ چیز تاریخ کا حصہ بن چکی ہے، جنرل سلامی

تہران {پاک صحافت} ایران قبضہ کرنے کی سرزمین نہیں، ہم نے دشمن کو کمزور کیا، تمام آپشنز میز پر ہیں، یہ چیز تاریخ کا حصہ بن چکی ہے، جنرل سلامی

پاسداران انقلاب اسلامی کے سربراہ سپاہ پاسداران نے کہا کہ اسلامی اور انقلابی ایران آج مضبوط اور طاقتور ہے اور ہر دشمن جانتا ہے کہ یہاں اس پر قبضہ نہیں کیا جا سکتا اس لیے اب اس نے اقتصادی پابندیوں کی پالیسی اپنا لی ہے۔

میجر جنرل حسین سلامی نے شہر الہام میں شہداء کی یاد میں منعقدہ پروگرام میں کہا کہ ہمارا سب سے بڑا فخر یہ ہے کہ ہم ایرانی عوام کے خادم ہیں اور ہماری سب سے بڑی نعمت ایرانی قوم اور عوام کی خواہشات کو قربان کرنا ہے۔ امام خمینی مرحوم نے قیام کیا۔ لیکن درود و سلام بھیجا جائے کہ انہوں نے ہمیں عزت، آزادی اور اتحاد کا راستہ سکھایا۔

انہوں نے علم کو شہداء کی سرزمین قرار دیتے ہوئے کہا کہ اہل علم دفاع مقدس کے دوران آٹھ سال تک دشمن کے مقابلے میں پہاڑ کی طرح کھڑے رہے اور یہ ایک ایسا عمل ہے جس کی تعریف اور تحسین کی جانی چاہیے۔

جنرل سلامی نے کہا کہ سرزمین علم صرف شہداء کی سرزمین نہیں بلکہ اس صوبے کے پہاڑ اور جنگلات بھی شہداء کو سلام پیش کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اہل علم دشمنوں کے مقابلے میں ڈٹے رہے تاکہ ان کی سرزمین پر قبضہ نہ کیا جائے اور انہوں نے حضرت علی علیہ السلام سے سیکھا ہے کہ اگر ان کی سرزمین پر دوسروں نے قبضہ کیا تو وہ ذلیل و رسوا ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ میدان جنگ قوموں کی امتحان گاہ ہوتی ہے اور اگر کوئی قوم سست روی کا مظاہرہ کرے اور اپنی اقدار کی حفاظت نہ کرے تو وہ تاریخ سے مٹ جاتی ہے۔ ساتھ ہی انہوں نے کہا کہ عالمی سلطنت کے خلاف ایرانی عوام کی جدوجہد جاری ہے۔

جنرل حسین سلامی نے صوبہ الہام کے تین ہزار شہداء کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ اگر یہ شہداء عاشورہ کے دن موجود ہوتے تو امام حسین علیہ السلام دشمنوں کے درمیان تنہا نہ ہوتے اور نہ ہی ان کے رشتہ داروں کو پکڑا جاتا۔ قیدی

انہوں نے کہا کہ اگر شہید نہ ہوتے تو وہ ہمیں سیاسی پلیٹ فارم سے ختم کر دیتے اور ہمارے مستقبل پر دوبارہ غلبہ پاتے۔ انہوں نے زور دے کر کہا کہ ہمارے شہداء کی عظمت قوموں کو آزاد کرنا اور شیطانوں اور عالمی سلطنت کو شکست دینا ہے۔

جنرل سلامی نے دشمن کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ہم آپ کو اچھی طرح جانتے ہیں، ہمارے پاس تجربہ ہے، ہماری قوم باخبر ہے، یہ آپ کے شیطانی جال میں نہیں آئے گی، آپ چاہتے ہیں کہ ہمارے لوگ بھوکے مریں، آپ نے ان کا راستہ روک رکھا ہے۔اور اس موقع پر عید نوروز کے موقع پر آپ ایرانی قوم کو مبارکباد کے پیغامات بھیجتے ہیں اور آپ سوچ رہے ہیں کہ ہماری قوم آپ کو نہیں پہچانتی۔

یہ بھی پڑھیں

گیلنٹ

گیلنٹ: اسرائیل نے گزشتہ 75 سالوں میں ایسی جنگ نہیں دیکھی

پاک صحافت صیہونی حکومت کے وزیر جنگ یوف گیلنٹ نے غزہ کی جنگ میں اسرائیلی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے