عمان

عمان کے مفتی نے غزہ کی پٹی سے مالی امداد اور ہتھیاروں کا مطالبہ کیا

پاک صحافت عمان کے مفتی اعظم نے ایک بار پھر غزہ کی پٹی کے باشندوں کی حمایت کا اعلان کرتے ہوئے ان کے لیے مالی امداد اور ہتھیاروں کا مطالبہ کیا ہے۔

پاک صحافت کی رپورٹ کے مطابق، “الخلیج آن لائن” کا حوالہ دیتے ہوئے، سلطنت عمان کے مفتی “شیخ احمد الخلیلی” کا کہنا ہے کہ جنہوں نے ہمیشہ غزہ کی پٹی کے باشندوں کی حمایت اور صیہونی حکومت کے خلاف موقف اختیار کیا ہے۔ غزہ کی پٹی کے خلاف آٹھ ماہ کی جنگ کے دوران، اپنے تازہ ترین موقف میں تمام مسلمانوں سے مطالبہ کیا کہ وہ فلسطینیوں، خاص طور پر غزہ کی پٹی کے باشندوں کے لیے خوراک، ہتھیار اور رہنے کے اخراجات فراہم کرنے کے لیے مالی امداد بھیجیں۔

اس درخواست کے علاوہ، انہوں نے ایکس سوشل نیٹ ورک پر غزہ کے النصیرات کیمپ میں صیہونی حکومت کی طرف سے کیے گئے حالیہ بھیانک جرم کا ذکر کرتے ہوئے مزید کہا: “ہم اپنی سب سے خوبصورت ہمدردی کا اظہار کرتے ہیں اور اپنی انتہائی مخلصانہ اور پاکیزہ دعائیں کرتے ہیں۔ فلسطین کے پیارے عوام بالخصوص غزہ کی پٹی کے باسیوں کے لیے جو صیہونی حکومت کی بربریت کی وجہ سے ہر ایک تک پھیل چکے ہیں۔

ہفتے کے روز صہیونی فوج نے نصرت کیمپ میں 4 صیہونی قیدیوں کو واپس لانے کے لیے اپنی کارروائی میں 270 سے زائد فلسطینی شہریوں کو شہید اور 400 کو زخمی کیا۔ تحریک حماس کے عسکری ونگ شہید عزالدین القسام بریگیڈ نے پھر ایک بیان میں اعلان کیا کہ صیہونی حکومت کی فوج نے چار صیہونی قیدیوں کی واپسی کی کوشش کرتے ہوئے تین دیگر اسیروں کو ہلاک کر دیا ہے۔

عمان کے مفتی نے تاکید کرتے ہوئے کہا: اس کے باوجود ہم ایک عظیم فتح و نصرت کے لیے پر امید ہیں۔ اس کے باوجود ہم تمام مسلمانوں سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ اپنی جائیداد کا ایک حصہ فلسطین کے متاثرین بالخصوص غزہ کی پٹی کے لوگوں کے لیے خوراک، اسلحہ اور دیگر زندگی گزارنے کے اخراجات کے لیے مختص کریں جو کہ ہر مسلمان پر فرض ہے۔

یہ بھی پڑھیں

فوجی

غزہ کی جنگ اپنے مقاصد کھو چکی ہے/20 سالوں میں فوج کی طاقت میں کمی

پاک صحافت صیہونی حکومت کے ریٹائرڈ جنرل اسحاق برک نے غزہ کے خلاف جنگ اپنے …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے