چین و فرانس

فرانس نے چین پر زور دیا ہے کہ وہ یوکرین جنگ کے خاتمے میں مدد کرے

پاک صحافت فرانسیسی صدر ایمانوئل میکرون نے بیجنگ میں چین کے صدر شی جن پنگ سے روس سے بات کرنے اور یوکرین جنگ کے خاتمے میں مدد کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

میکرون نے اپنے چینی ہم منصب کو بتایا کہ وہ جانتے ہیں کہ چین روس کو یوکرین کے معاملے پر مذاکرات میں واپس لے جا سکتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ چین روس کو راضی کر کے مذاکرات کی میز پر واپس لا سکتا ہے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ فرانس اس سے قبل بھی یوکرین جنگ کے خاتمے کی کوشش کر چکا ہے تاہم امریکہ اور برطانیہ اس جنگ کو جاری رکھنے پر بضد ہیں۔

کہا جا رہا ہے کہ یورپی ممالک شروع سے ہی اس جنگ کے خلاف تھے لیکن امریکہ کے دباؤ پر یوکرین جنگ کی حمایت کر رہے ہیں۔

یوکرین اور روس کے بعد یورپی ممالک اس جنگ سے سب سے زیادہ نقصان اٹھا رہے ہیں جہاں ان کی سلامتی خطرے میں ہے جب کہ ان ممالک کے عوام کو بے مثال مہنگائی اور بے روزگاری کا سامنا ہے۔

ایک فرانسیسی اہلکار کا کہنا ہے کہ صدر میکرون اور چینی صدر شی کے درمیان ملاقات نتیجہ خیز رہی، جہاں دونوں رہنماؤں نے یوکرین جنگ اور دو طرفہ تعلقات پر تبادلہ خیال کیا۔

بیجنگ میں مشترکہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے میکرون نے کہا: “جب تک یوکرین پر قبضہ ہے، یورپ کی سلامتی خطرے میں ہے اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے ایک رکن نے اقوام متحدہ کے چارٹر کی خلاف ورزی کی ہے، جو کہ ناقابل قبول ہے۔”

یہ بھی پڑھیں

نیوزیلینڈ

نیوزی لینڈ نے اسرائیل کے جرائم سے منسلک حماس کے اثاثے منجمد کر دیے

پاک صحافت نیوزی لینڈ نے فلسطین کے خلاف مغربی پالیسیوں کے مطابق اور غزہ میں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے