چین اور روس

کیا اب چین بین الاقوامی معاملات میں بھی امریکہ کی جگہ لے رہا ہے؟

پاک صحافت چینی صدر شی جن پنگ پیر کو تین روزہ دورے پر روس کے دارالحکومت ماسکو پہنچے، جہاں انہوں نے روسی صدر ولادیمیر پوٹن سے ون آن ون ملاقات کی اور دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو مزید مضبوط بنانے کے امور پر تبادلہ خیال کیا۔

ایران اور سعودی عرب کے درمیان سفارتی تعلقات کی بحالی کے لیے حال ہی میں ثالثی کرنے والے چینی صدر نے یوکرین کے بحران کے حل کے لیے 12 نکاتی امن منصوبے کی پیشکش کی ہے۔

چین کے امور کے ماہر ایڈورڈ چان کا کہنا ہے کہ شی کے دورہ روس کا مقصد دونوں ممالک کے درمیان قریبی شراکت داری کو مزید مضبوط کرنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ یہ توقع کرنا مناسب ہے کہ چین اور روس کے درمیان اقتصادی اور سفارتی طور پر مضبوط تعلقات ہوں گے۔

کہا جا رہا ہے کہ چینی صدر کے دورہ ماسکو کے دوران پیوٹن اور شی جن پنگ تیل، گیس اور توانائی کی منتقلی کے لیے پائپ لائن پر بھی بات کر سکتے ہیں۔ دوسری جانب ایران سعودی عرب کی دوستی کے بعد اگر چین روس اور یوکرین کے درمیان جنگ روکنے میں کامیاب ہو جاتا ہے اور عالمی امن ساز کا درجہ حاصل کر لیتا ہے تو یہ شی جن پنگ کی بڑی کامیابی ہو گی۔

یہ بھی پڑھیں

نظر سنجی

ایک سروے کے نتائج کے مطابق: اس ملک میں بدامنی کے بارے میں امریکی عوام کی تشویش میں اضافہ ہوا ہے

پاک صحافت اپسوس کے سروے کے نتائج کے مطابق امریکہ کے سابق صدر ڈونلڈ ٹرمپ …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے