افغانستان

افغانستان کی سابق قانون ساز اور نڈر چیمپئن کو کابل میں ان کے گھر میں قتل کر دیا گیا

پاک صحافت افغان پولیس کا کہنا ہے کہ سابق قانون ساز مرسل نبی زادہ اور ان کے محافظ کو دارالحکومت کابل میں ایک کمپاؤنڈ کے اندر گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا۔

اتوار کے حملے میں افغان خاتون رکن پارلیمنٹ کا بھائی اور اس کا دوسرا سکیورٹی گارڈ زخمی ہو گیا۔

32 سالہ مرسل نبی زادہ ان خواتین پارلیمنٹرینز میں سے ایک تھیں جو اگست 2021 میں طالبان کے اقتدار میں آنے کے بعد بھی کابل میں ہی رہیں۔

مرسل نبی زادہ کے قریبی ساتھیوں نے ان کی خدمات کو سراہتے ہوئے انہیں افغانستان کاز کا نڈر چیمپئن قرار دیا جنہوں نے ملک چھوڑنے کے موقع کو ٹھکرا دیا اور کابل میں رہتے ہوئے حالات کا سامنا کیا۔

خاتون پارلیمنٹرین کے قتل کی تحقیقات کے حوالے سے کابل پولیس کے ترجمان خالد زدران کا کہنا تھا کہ سیکیورٹی فورسز نے واقعے کی سنجیدگی سے تحقیقات شروع کردی ہیں۔

سابق خاتون پارلیمنٹیرین مریم سلیمان نے کہا کہ نبی زادہ خطرات کا سامنا کرتے ہوئے ایک نڈر اور مضبوط خاتون تھیں جو مشکلات کے باوجود ہمیشہ حق کے لیے کھڑی رہیں۔ انہوں نے ٹویٹ میں لکھا کہ افغانستان چھوڑنے کا موقع ملنے کے باوجود نبی زادہ نے اپنے لوگوں کے ساتھ رہنے اور ان کے حقوق کے لیے لڑنے کو ترجیح دی۔

نبی زادہ 2018 میں کابل سے رکن پارلیمنٹ منتخب ہوئے اور طالبان کے اقتدار سنبھالنے تک اس عہدے پر فائز رہے۔

یہ بھی پڑھیں

پالیسی

خارجہ پالیسی: مغربی حمایت یوکرین کو روس کے خلاف نہیں جیت سکتی

پاک صحافت روسی حملوں کو روکنے کے لیے کیف کو فعال کرنے میں مغربی فوجی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے