بائیڈن

یوکرین پر حملے کی صورت میں روس کے منہ توڑ جواب دینے کی دھمکی سے بائیڈن کے بدلے سر

واشنگٹن {پاک صحافت} امریکہ اور مغربی ممالک نے خبردار کیا ہے کہ روس اپنے پڑوسی ملک یوکرین پر حملہ کرنے کے راستے پر گامزن ہے۔

دریں اثناء بدھ کو امریکی صدر جو بائیڈن نے کہا کہ ان کے خیال میں ان کے روسی ہم منصب ولادیمیر پوٹن یوکرین میں چھوٹے پیمانے پر مداخلت کریں گے لیکن وہ ایک مکمل جنگ سے بچنا چاہتے ہیں۔

تاہم بائیڈن نے اس سے قبل روس کو دھمکی دیتے ہوئے کہا تھا کہ اگر اس نے یوکرین پر حملہ کیا تو اسے امریکا کی جانب سے سخت کارروائی کا سامنا کرنا پڑے گا۔

لیکن امریکی صدر کے اس تازہ بیان کے بعد یوکرین میں کشیدگی بڑھ گئی ہے اور ان پر کثرت سے تنقید کی جا رہی ہے۔

جمعرات کو، یوکرین کے صدر ولادیمیر زیلنسکی نے بھی بائیڈن کے بیان پر سخت تنقید کی۔

روس کے صدر ولادیمیر پوٹن نے گزشتہ کئی ہفتوں سے یوکرین کی سرحد پر دس لاکھ سے زائد فوجی جمع کر رکھے ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ وہ نیٹو کو اپنی سرحدوں تک رسائی کی اجازت نہیں دیں گے۔

پوٹن امریکہ اور مغرب سے اس بات کی یقین دہانی کے خواہاں ہیں کہ یوکرین کبھی بھی نیٹو کا رکن نہیں بنے گا اور یہ کہ نیٹو اتحاد مشرقی یورپ میں تمام فوجی سرگرمیاں بند کر دے گا۔

یہ بھی پڑھیں

نیوزیلینڈ

نیوزی لینڈ نے اسرائیل کے جرائم سے منسلک حماس کے اثاثے منجمد کر دیے

پاک صحافت نیوزی لینڈ نے فلسطین کے خلاف مغربی پالیسیوں کے مطابق اور غزہ میں …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے