8.1 C
Pakistan
منگل, نومبر 30, 2021

مغربی ممالک شامی مہاجرین کو اپنے ملک واپس جانے سے روک رہے ہیں

بیروت {پاک صحافت} لبنانی وزیر خارجہ نے شامی پناہ گزینوں کی اپنے ملک میں واپسی کو مغرب کی طرف سے سبوتاژ کرنے کا ذکر کرتے ہوئے کہا: "مغربی شامی مہاجرین کی اپنے ملک میں واپسی کو روک رہے ہیں۔”

پاک صحافت نیوز ایجنسی نے العہد کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ لبنان کے وزیر خارجہ عبداللہ بو حبیب نے شام سے واپسی کے راستے میں مغربی ممالک کی تخریب کاری کے بارے میں بات کی۔

رپورٹ کے مطابق لبنان کے وزیر خارجہ نے اس سلسلے میں کہا: مغربی ممالک شامی مہاجرین کی وطن واپسی کو روک رہے ہیں۔ یہ ممالک نہ صرف بے گھر افراد کی واپسی کی حمایت نہیں کرتے بلکہ انہوں نے بے گھر افراد کو اپنے وطن واپس جانے سے روکنے کی ہر ممکن کوشش کی ہے۔

بہابیب نے کہا، "جو بات واضح نظر آتی ہے وہ یہ ہے کہ مغربی ممالک دمشق حکومت کے بارے میں اپنے موقف کی وجہ سے پناہ گزینوں کو اپنے وطن واپس جانے سے روک رہے ہیں۔” ہم نے گزشتہ عرصے میں شامی پناہ گزینوں کی ان کے ملک میں واپسی کے لیے روسی تعاون کا مشاہدہ کیا ہے۔

حال ہی میں شام کے وزیر خارجہ فیصل المقداد نے دمشق کے بارے میں مغربی ممالک کے معاندانہ رویے پر کڑی تنقید کی۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے روس کے ساتھ مل کر شامی پناہ گزینوں کی ان کی زمینوں پر واپسی کی تیاری کے لیے سخت محنت کی ہے۔

المقداد نے کہا: "تمام تر کوششوں کے باوجود مغربی ممالک جھوٹ اور جھوٹے پروپیگنڈے کے ذریعے شامی پناہ گزینوں کی اپنی سرزمین میں واپسی کو روکنے کی کوشش کر رہے ہیں۔”

انھوں نے مزید کہا: "شام کے پناہ گزینوں کی ان کے ملک میں واپسی کے معاملے کو اب بھی شدید سیاسی کام اور مغربی ممالک کے شدید دباؤ کا سامنا ہے۔” انہوں نے مزید کہا: "مغربی دباؤ کا مقصد شام میں زیادہ تر پناہ گزینوں کی واپسی کو سبوتاژ کرنا ہے۔” وہ سیاسی مطالبات کی تکمیل کے خواہاں ہیں جو اقوام متحدہ کے چارٹر سے متصادم ہیں۔

انہوں نے کہا کہ "کچھ بین الاقوامی تنظیمیں شامیوں کو واپس نہ آنے کی ترغیب دینے میں ملوث ہیں، خاص طور پر شام کے اندر کی صورتحال کو گمراہ کر کے”۔ المقداد نے زور دے کر کہا کہ شامی حکومت نے پناہ گزینوں کی واپسی کو آسان بنانے کے لیے بھرپور کوششیں کی ہیں۔

Related Articles

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

seven − two =

Latest Articles