مصر نے مقبوضہ بیت المقدس میں‌ یہودی آباد کاری کے نئے منصوبے کی شدید مذمت کردی

مصر نے مقبوضہ بیت المقدس میں‌ یہودی آباد کاری کے نئے منصوبے کی شدید مذمت کردی

مصر نے مقبوضہ بیت المقدس میں‌ یہودی آباد کاری کے نئے منصوبے کی شدید مذمت کی ہے جس میں اسرائیلی حکومت نے القدس میں یہودیوں ‌کے لیے 8300 نئے مکانات تعمیر کرنے کا اعلان کیا ہے۔

مصری وزارت خارجہ کے ترجمان احمد حافظ نے ایک بیان میں‌ کہا ہے کہ بیت المقدس میں‌ مکانات کی تعمیر کا اسرائیلی اعلان اقوام متحدہ اور عالمی اداروں کی قراردادوں‌ کی کھلی خلاف ورزی ہے۔

خیال رہے کہ حال ہی میں بیت المقدس میں اسرائیلی بلدیہ کے نام نہاد میئر موشے لیئون نے کہا تھا کہ بلدیہ نے 20 سالہ تعمیراتی منصوبہ شروع کیا ہے جس کے پہلے مرحلے پر بیت المقدس میں‌ یہودیوں ‌کو بسانے کے لیے 8 ہزار 300 مکانات تعمیر کیے جائیں گے۔

مسٹر لیئون کا کہنا تھا کہ یہ مکانات تلیبوت نامی یہودی کالونی میں تعمیر کیے جائیں گے جس کے لیے 13 لاکھ مربع میٹر کی جگہ کمرشل عمارتیں، ریلوے، تفریحی پارک، اسکول اور دیگر ادارے قائم کیے جائیں گے۔

یہ بھی پڑھیں

امریکی

امریکی ریپبلکن پارٹی کے سربراہ نے ٹرمپ کے دباؤ پر استعفیٰ دے دیا

پاک صحافت نیشنل کمیٹی کی سربراہ اور امریکہ کی ریپبلکن پارٹی کی رہنما رونا میک …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے