لواحقین سے میتوں کی  تدفین کی درخواست ہے: جام کمال

لواحقین سے میتوں کی  تدفین کی درخواست ہے

 

بلوچستان (پاک صحافت) بلوچستان کے وزیر اعلیٰ  جام کمال نے رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر جاری کیے گئے اپنے بیان میں کہا کہ میں ایک بار پھر سانحہ مچ میں جاں بحق افراد کے لواحقین سے میتوں کی تدفین کی درخواست کر رہا ہوں۔ہزارہ برادری کا احتجاج جاری ہے ۔

تفصیلات کے مطابق بلوچستان کے وزیر اعلی ٰ جام کمال خان نے دھرنےکےشرکاء سے درخواست کرتے ہوئے کہا کہ مذہبی فریضے کو نہ روکا جائے۔سماجی رابطے ٹویٹرپر بیان دیتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ میں آپ سے ایک بار پھر میتوں کی تدفین کی درخواست کرتا ہوں۔

مزید پڑھیں: کراچی اور دیگر علاقوں میں ہزارہ برادری کے حق میں دھرنے جاری

یاد رہے کہ سانحہ مچھ کے خلاف کوئٹہ میں ہزارہ برادری کا احتجاجی دھرنا آج پانچویں روز بھی جاری ہے، لواحقین اپنے پیاروں کی میتوں کے ہمراہ دھرنے میں شریک ہیں۔شدید سردی کے باوجود سانحہ مچھ کے خلاف جاں بحق کان کنوں کے لواحقین اور ہزارہ برادری دھرنا جاری رکھے ہوئے ہیں، دھرنے کےشرکاء نے جاں بحق کان کنوں کی میتیں مغربی بائی پاس روڈ پر رکھی ہوئی ہیں۔

گزشتہ روز وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال خان بھی دھرنے پر پہنچے تھے اور شرکاء سے میتوں کی تدفین کی درخواست کی لیکن ان کی کوششیں بھی بارآور ثابت نہ ہوسکیں ۔دھرنے کے شرکاء نے وزیراعظم عمران خان کی کوئٹہ آمد تک دھرنا ختم کرنے اور میتوں کی تدفین سے انکار کر دیا ہے۔

واضح رہے کہ 3 جنوری کو بلوچستان کے ضلع بولان کے علاقے مچھ کی کوئلہ فیلڈ میں فائرنگ کا واقعہ پیش آیا تھا جس میں نامعلوم دہشت گردوں نے کان کنوں کو پہاڑوں پر لے جا کر ان پر فائرنگ کر دی تھی جس کے نتیجے میں 11 کان کن جاں بحق جبکہ 4 زخمی ہو گئے۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں