دنیا بدل چکی ہے،امریکہ حقائق تسلیم کرے:وزیر خارجہ

پاکستان میں دہشت گردی کے پیچھے کچھ بیرونی قوتوں کاہاتھ ہے

ملتان (پاک صحافت) وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نےصدر جو بائیڈن کی نئی امریکی انتظامیہ پر زور دیا کہ وہ یہ تسلیم کریں کہ دنیا ، پاکستان اور خاص طور پر ہندوستان نے پچھلے چار سال میں بہت کچھ بدلا ہے ، لہذا کسی بھی طرح کے تعلقات کو نئے حقائق کی بنیاد پر استوار کرنا چاہئے۔

تفصیلات کے مطابق ملتان میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے قریشی کا کہنا تھا کہ ان کا نئی ​​امریکی انتظامیہ کے لئے ایک "مختصر پیغام” ہے، چار سال میں دنیا بدلی ہے ، خطہ بدلا ہے اور پاکستان بدل گیا ہے اور آپ کو اس نئے پاکستان کے ساتھ کام کرنا پڑے گا۔

مزید پڑھیں: بائیڈن افغان امن عمل کو آگے بڑھائیں:قریشی

قریشی نے مزید کہا  کہ ہندوستان بدل گیا ہے، آج وہی چمکدار اور سیکولر ہندوستان ہے؟ نہیں۔انہوں نے کہا کہ ہندوستان کے اندر سے آوازیں اٹھ رہی ہیں اور اس کی تصدیق کر رہی ہیں کہ یہ سیکولر ہندوستان نہیں ہے ، یہ "ہندوتوا کا نیا چہرہ ہے ، آر ایس ایس کی سوچ کا ایک نیا عملی مظاہرہ ہے، ہندوستان میں اقلیتیں خود کو غیر محفوظ محسوس کررہی ہیں۔

وزیر خارجہ نے کہا کہ اس نئی حقیقت کی بنیاد پر ، پی ٹی آئی حکومت "امریکی نقطہ نظر اور نئی رہنما خطوط” کی بنیاد پر نئی امریکی انتظامیہ کے ساتھ شمولیت کی امید کرتی ہے۔ان کاکہناتھا”میں سمجھتا ہوں کہ امریکہ کی موجودہ سوچ اور ہماری پالیسیوں میں  بہت مماثلت ہے۔

انہوں نے مزید بتایا کہ انہوں نے آنے والے امریکی وزیر خارجہ انتھونی بلنکن کو ایک خط لکھ کر پاکستان کی موجودہ پالیسیوں کےبارے میں جانکاری دی ہے اور آنے والے دنوں میں اس معاملے پر مزید بات چیت کرنے کے منتظر ہیں۔وزیر خارجہ نے کہا "ہم نے جیو اسٹریٹجک پوزیشن سے لے کر جیو معاشی پوزیشن تک ایک بہت بڑی تبدیلی کی ہے۔

قریشی نے اپوزیشن پر تنقید کرتے ہوئے ان کی تحریک پر بھی سوال اٹھائے ۔انہوں نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت اور اس کے اتحادیوں کو اعتماد ہے کہ وہ اس کا مقابلہ کرنے اور اسے آئینی اور پارلیمانی انداز میں شکست دینے کی پوزیشن میں ہیں۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں