فوج

غزہ میں خدمات انجام دینے سے “گیواتی” بریگیڈ کے متعدد فوجیوں کی نافرمانی

پاک صحافت صیہونی حکومت کے خبر رساں ذرائع نے اطلاع دی ہے کہ اس حکومت کی فوج کے “گیواتی” بریگیڈ کے متعدد فوجیوں نے غزہ کی پٹی میں خدمات انجام دینے سے انکار کر دیا ہے۔

پاک صحافت کے مطابق، صہیونی ٹی وی چینل “کان” نے جمعرات کو اعلان کیا: گیواتی بریگیڈ کی اجتماعی “تسبر” بٹالین کے 9 فوجیوں کو ملک بدری کے احکامات نہ ماننے کی وجہ سے غزہ کی پٹی سے نکال لیا گیا ہے۔

اس نیٹ ورک کے مطابق ان 9 فوجیوں کے اہل خانہ نے اس اعلان کے بعد کہا کہ وہ غزہ کی جنگ سے تھک چکے ہیں اور دماغی صحت کی دیکھ بھال پر بات کرنے کے لیے حکام سے ملاقات کرنے کی درخواست کی۔

قابض حکومت غزہ کی پٹی کے خلاف جنگ میں اپنا ایک فاتحانہ امیج پیش کرنا چاہتی ہے، لیکن معاملے کی حقیقت بتاتی ہے کہ اس حکومت کو فلسطینیوں کی مزاحمت سے بھاری شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے اور وہ غزہ کی دلدل میں پھنس چکی ہے، اور ان کی تعداد بہت زیادہ ہے۔ مرنے والوں اور زخمیوں کی تعداد اس صورتحال کا ثبوت ہے ۔حی تل ابیب اور صیہونی حکومت کے فوجیوں میں ڈپریشن اور خودکشی کی خواہش میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے۔

صہیونی اخبار “یدیعوت احارینوت” کے عسکری تجزیہ کار “رونن برگمین” نے کل بدھ کو ایکس چینل (سابق ٹویٹر) پر ایک پیغام میں اعلان کیا کہ اسرائیلی فوج غزہ کی (دلدل) میں دھنس گئی ہے۔

انہوں نے صہیونی قیدیوں کی رہائی کے عمل کے زوال کا ذکر کرتے ہوئے لکھا: قیدی اسیری سے تھک چکے ہیں اور اسرائیلیوں کی عوام کو من گھڑت خبروں اور جھوٹوں سے بے نقاب کیا جا رہا ہے۔

صیہونی حکومت کے عسکری میدان کے اس تجزیہ کار نے فوجی کارروائیوں میں فلسطینی مزاحمت کی شکست کو ایک ناقابل حصول ہدف قرار دیا اور کہا: قیدیوں کی رہائی کے لیے فوجی دباؤ کی حکمت عملی کامیاب نہیں ہوسکی ہے۔

قبل ازیں صہیونی اخبار یدیعوت احارینوت نے اس بات پر زور دیا تھا کہ صہیونی فوجیوں کو غزہ کے خلاف جنگ میں جن اذیت ناک حالات کا سامنا کرنا پڑا ان کی وجہ سے انہیں نفسیاتی دیکھ بھال کی ضرورت ہوگی۔

اس حوالے سے صیہونی حکومت کے چینل 12 نے حال ہی میں اعلان کیا تھا کہ ایک اسرائیلی فوجی نے جو کہ غزہ کے خلاف جنگ سے ابھی واپس آیا تھا، جنگ کے باعث پیدا ہونے والے نفسیاتی دباؤ کی وجہ سے اپنے ایک دوست کو اپنی بندوق سے گولی مار کر ہلاک کر دیا۔

صیہونی ذرائع نے پہلے اعلان کیا تھا کہ غزہ کے خلاف جنگ کے آغاز سے اب تک 9000 صہیونی فوجیوں کا نفسیاتی علاج ہو چکا ہے اور ان میں سے ایک چوتھائی جنگ میں واپس نہیں آئے ہیں۔

دوسری جانب ذہنی عارضے میں مبتلا صہیونی فوجیوں کی خودکشی ایک عام سی بات بن چکی ہے اور صہیونی میڈیا نے متعدد بار فوجی دستوں کے ہاتھوں خود سوزی، پھانسی اور گولی مارنے کی خبریں دی ہیں۔

یہ بھی پڑھیں

اسرائیلی

اسرائیلی فوج کے ملٹری انٹیلی جنس ڈیپارٹمنٹ کے سربراہ نے استعفیٰ دے دیا

پاک صحافت صیہونی ذرائع ابلاغ نے اطلاع دی ہے کہ 7 اکتوبر 2023 کو فلسطینی …

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے