8 C
Pakistan
منگل, نومبر 30, 2021

صہیونیوں کے ساتھ پانی کے بدلے بجلی کے معاہدے کے خلاف اردن کی عوام کا احتجاج

پاک صحافت صہیونیوں کے ساتھ پانی کے بدلے بجلی کے معاہدے کے خلاف اردن کے لوگ جمعہ کو احتجاج کر رہے ہیں۔
اردن کے باشندے جمعے کو صیہونی حکومت کے ساتھ حکومت کے نئے معاہدے کے خلاف مظاہرہ کر رہے ہیں، جسے "بجلی کے لیے پانی کا معاہدہ” کہا جاتا ہے۔

صہیونیوں کے ساتھ پانی کے بدلے بجلی کے معاہدے کے خلاف اردن کے لوگ جمعہ کو احتجاج کر رہے ہیں۔
فارس خبر رساں ایجنسی کے بین الاقوامی گروپ کے مطابق اردن، متحدہ عرب امارات اور صیہونی حکومت کے درمیان بجلی اور پانی کے شعبے میں تعاون کے حوالے سے مفاہمت کی یادداشت پر دستخط نے اردنی عوام کو غصے میں ڈال دیا ہے۔

دبئی ایکسپو 2020 میں پیر کے روز دستخط کیے گئے مفاہمت کی یادداشت کے مطابق، اردن صیہونی حکومت کو شمسی توانائی کے ذریعے بجلی سے لیس کرے گا، اور اس کے بدلے میں، حکومت اردن کے لیے پانی کو صاف کرنے کے اقدامات کرے گی، جو نقصان کا شکار ہے۔

اس منصوبے کو متحدہ عرب امارات اور امریکی تعاون سے فنڈز فراہم کیے جائیں گے۔

مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کرنے پر اردنی باشندوں کی جانب سے ملے جلے ردعمل کا سامنا کرنا پڑا، جس نے اردنی شہریوں سے مطالبہ کیا کہ وہ جمعہ کے روز عمان کی الحسینی مسجد کے سامنے صیہونی حکومت کے ساتھ کسی بھی معاہدے کی مخالفت کرنے کے لیے مظاہرے کا اعلان کریں۔

العربی الجدید ویب سائٹ کے مطابق، الحرکہ الشبیہہ الطغیر نے اردنی باشندوں سے بھی مظاہروں میں شرکت کی اپیل کی ہے، اس بات پر زور دیتے ہوئے کہ اردنی عوام نہ تو آئینی ہیرا پھیری کا سلسلہ جاری رکھیں گے، نہ ہی شرمناک معاہدوں اور نہ ہی شرمناک معاہدوں سے۔ "صدی کے معاہدے پر عملدرآمد”، اس نے کہا۔

اردنی اخوان المسلمون نے اردن کی حکومت سے اردنیوں کے لیے حساس اور اہم مسائل پر اپنی خاموشی توڑنے کا مطالبہ بھی کیا۔

اس گروپ نے صیہونی حکومت کے ساتھ تعلقات کو معمول پر لانے کے خلاف اپنے مضبوط موقف کا اعادہ کیا جو فلسطینی عوام کے خلاف بدترین دہشت گردی اور جرائم کا ارتکاب کرتی ہے۔

Related Articles

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں

two × two =

Latest Articles