ایران نے یورینیم کی افزودگی کے بارے میں بڑا اعلان کردیا

ایران نے یورینیم کی افزودگی کے بارے میں بڑا اعلان کردیا

تہران (پاک صحافت) ایران نے یورینیم کی افزودگی 20 فیصد بڑھانے کا عندیہ دے دیتے ہوئے اعلان کیا ہے کہ ایران جلدی ہی جوہری توانائی کا پروگرام از سر نو شروع کردے گا۔

غیرملکی خبررساں ادارے اے ایف پی کے مطابق ایران نے اقوام متحدہ کے جوہری نگراں کے ادارے کو یورینیم کی افزودگی سے متعلق اپنا ارادہ ظاہر کردیا، جوہری توانائی کے نگراں ادارے (آئی اے ای اے) نے یورینیم کی افزودگی سے متعلق ایران کے ارادے کی تصدیق کی۔

آئی اے ای اے نے کہا کہ ایران نے ایجنسی کو آگاہ کیا ہے کہ حال ہی میں ملک کی پارلیمنٹ کی جانب سے منظور شدہ قانونی عمل کی تعمیل کے لیے ایران کی جوہری توانائی تنظیم فورڈو فیول افزودگی کے پلانٹ میں 20 فیصد تک کم-درجے کی یورینیم

افزودہ تیار کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔

مزید پڑھیں:ایرانی پارلیمنٹ نے جوہری تنصیبات کے حوالے سے اہم بل منظور کرلیا

واضح رہے کہ اس سے قبل 31 دسمبر کو آئی اے ای اے کو ملنے والے ایرانی مراسلے میں افزدوگی سے متعلق باتیں کی گئی تھیں، آئی اے ای اے کے بیان میں کہا گیا تھا کہ ایران کے خط یہ نہیں بتایا کہ یہ افزودگی کی سرگرمی کب ہوگی۔

امریکی انٹیلی جنس ایجنسیوں اور آئی اے ای اے کا خیال ہے کہ ایران کے پاس ایک خفیہ اور مربوط جوہری ہتھیاروں کا پروگرام تھا جو 2003 میں روک دیا گیا تھا۔

نومنتخب امریکی صدر جوبائیڈن نے اس بات کا اشارہ دیا تھا کہ واشنگٹن ایران کے جوہری پروگرام کو محدود کرنے کے مقصد سے مشترکہ جامع منصوبے میں شامل ہوجائیں گے۔

جرمنی کے وزیر خارجہ ہیکو ماس نے کہا تھا کہ امریکی انتظامیہ کی تبدیلی کا مطلب یہ ہے کہ ایران کے ساتھ مثبت پیش رفت کے لیےآخری کوشش موجود ہے جسےضائع نہیں ہونا چاہیے۔

ایران کی جانب سے یورینیم کی افزودگی سے متعلق بیان ایسے وقت پر سامنے آیا جب نومبر 2020 میں ایران کے نامور جوہری سائنسدان محسن فخری زادہ کو دارالحکومت تہران کے قریب فائرنگ کرکے قتل کردیا گیا تھا، ایران نے کہا تھا کہ جوہری سائنسدان کے قتل میں اسرائیلی اسلحہ استعمال ہوا تھا۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں