فلسطینیوں کو کورونا ویکسین سے محروم کرکے اسرائیل نے ثابت کردیا کہ وہ ایک نسل پرست ریاست ہے: امریکی رکن کانگریس

فلسطینیوں کو کورونا ویکسین سے محروم کرکے اسرائیل نے ثابت کردیا کہ وہ ایک نسل پرست ریاست ہے: امریکی رکن کانگریس

واشنگٹن (پاک صحافت) امریکی کانگریس کی مسلمان اور عرب نژاد رکن رشیدہ طلیب نے فلسطینیوں‌ کو کورونا ویکسین سے محروم رکھنے پر ایک بار پھر اسرائیل کو کڑی تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہے کہ اسرائیل نے فلسطینیوں کو کورونا ویکسین کی فراہمی سے انکار کرکے ثابت کیا ہے کہ اسرائیل ایک نسل پرست ملک ہے۔

فلسطینی نژاد رشیدہ طلیب نے کہا کہ یہ بات ناگزیر ہوچکی ہے کہ ہم ادراک کریں کہ اسرائیل ایک نسل پرست ریاست ہے جس نے فلسطینی قوم کو کورونا ویکسین سے محروم کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ میری دادی فلسطین میں ہیں اور انہیں کورونا ویکسین نہیں دی جا رہی ہے، اسرائیل فلسطینیوں کو انسان نہیں سمجھتا اور انہیں زندہ رہنے کا حق دینے سے انکاری ہے حالانکہ فلسطینیوں‌ کو بھی عالمی وبا سے بچائو کا حق چاہیے۔

امریکا میں ڈیموکریٹک رکن کانگریس نے کہا کہ اسرائیل کا مسلسل ایک نسل پرست ریاست قائم رہنا ناقابل قبول ہے، اسرائیلی اپنے پڑوسیوں سے جینے کا حق بھی چھین رہے ہیں حالانکہ فلسطینی بھی انہی آبادیوں میں سانس لے رہے ہیں ‌جہاں اسرائیلی آباد ہیں۔

رشیدہ طلیب نے مزید کہا کہ مجھے امید ہے کہ ہمارا ملک یہ ادراک کرے گا کہ فلسطینی کیا ہیں، وہ طویل عرصے سے ہم سے اچھی خبر کے لیے امیدیں لگائے بیٹھے ہیں، اسرائیل فلسطینیوں‌کو کوئی اہمیت نہیں دیتا اور نہ ہی انہیں مساوی انسانی حقوق فراہم کررہا ہے، کورونا ویکسین کی تقسیم میں فلسطینیوں سے امتیازی سلوک نے ثابت کردیا کہ اسرائیل ایک کھلم کھلا نسل پرست ریاست ہے۔

جواب چھوڑ دیں

براہ مہربانی اپنی رائے درج کریں!
اپنا نام یہاں درج کریں